منتخب ہو کر غرب اردن کی یہودی بستیوں کو اسرائیل میں ضم کر دوں گا: یاہو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے حالیہ انتخاب میں کامیابی کی صورت میں غرب اردن کے علاقے میں قائم یہودی بستیوں کو اسرائیل میں شامل کرنے کا اعلان کیا ہے۔

اسرائیلی چینل 12 کے مطابق ان خیالات کا اظہار اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے ایک انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ انتخابات میں کامیابی اور حکومت قائم کرنے کی صورت میں ان کی حکومت پہلی فرصت میں مقبوضہ غرب اردن کے علاقے میں موجود یہودی بستیوں کو اسرائیل کا حصہ قرار دے دی گی۔

یاد رہے کہ اسرائیل میں انتخابات 9 اپریل کو منعقد ہو رہے ہیں اور کرپشن الزامات میں پھنسے وزیراعظم نیتن یاہو کے پاس دوسری بار منصب سنبھالنے کے لیے کارکردگی نام کی کوئی چیز نہیں اس لیے وہ مسلمان دشمن عزائم کا اظہار کر کے یہودی ووٹرز کو متوجہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

بعد ازاں چینل 12 سے گفتگو میں بھی نیتن یاہو کا کہنا تھا کہ وہ اسرائیل کی حاکمیت برقرار رکھنے کے لیے ہر اقدام اٹھائیں گے۔ جیسے جیسے انتخابات قریب آرہے ہیں فلسطینی بستیوں پر قابض اسرائیلی فوج کے حملوں میں بھی اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں