فجیرہ کے نزدیک تخریب کاری کے بعد خلیج کی اسٹاک مارکیٹس میں شدید خسارہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

متحدہ عرب امارات کے ساحلوں کے مقابل علاقائی پانی میں سعودی اور اماراتی آئل ٹینکروں کو تخریب کاری کا نشانہ بنائے جانے اور ماحول میں کشیدگی بڑھنے کے ساتھ ہی پیر کے روز خلیجی اسٹاک مارکیٹس میں شدید مندی چھا گئی۔

اس موقع پر سعودی اسٹاک مارکیٹ کے انڈیکس میں 3.55% کی کمی واقع ہوئی اور انڈیکس 8366 پوائنٹس تک آ گیا۔ ابوظبی مارکیٹ کا انڈیکس 3.32% اور دبئی مارکیٹ کا انڈیکس 3.97%. کم ہوا۔ کویت کی اسٹاک مارکیٹ 1.37% نیچے آ کر 6078 پوائنٹس پر بند ہوئی۔

سعودی وزیر توانائی انجینئر خالد الفالح نے پیر کے روز تصدیق کی تھی کہ اتوار کے روز امارات کے علاقائی پانی کے نزدیک سعودی عرب کے دو آئل ٹینکروں کو تخریب کاری کا نشانہ بنایا گیا۔ اگرچہ اس حملے کے نتیجے میں کوئی جانی نقصان یا ایندھن کا رساؤ نہیں ہوا تاہم دونوں بحری جہازوں کے ڈھانچے کو شدید نقصان پہنچا۔ البتہ اس حملے نے عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا۔

وثیق فنائنشل سروسز میں ویلتھ مینجمنٹ کے چیف ایگزیکٹو ہشام ابو جامع نے العربیہ نیوز چینل کے ساتھ انٹرویو میں کہا کہ جیو پولیٹیکل کشیدگی نے سعودی اسٹاک مارکیٹ کی کارکردگی پر بڑے پیمانے پر اثرات مرتب کیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آخری آٹھ ٹریڈنگ سیشنوں کے دوران انڈیکس میں 10% سے زیادہ کمی واقع ہوئی۔

پیر کے روز سعودی اسٹاک مارکیٹ کے انڈیکس میں 308.02 پوائنٹس کی کمی واقع ہوئی۔ ٹریڈنگ سیشن کے دوران سودوں کی مالیت 5.3 ارب ریال سے زیادہ رہی۔

مقبول خبریں اہم خبریں