.

وڈیو: لبنان کے وزیر صحت عوامی رقص کے ساتھ کرونا کا مقابلہ کرنے میں مصروف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والے ایک وڈیو کلپ میں لبنان کے وزیر صحت عوام کے بیچ رقص کرتے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔ یہ وڈیو ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب ملک میں وسیع پیمانے پر کرونا وائرس کا پھیلاؤ دیکھنے میں آ رہا ہے۔

جس روز لبنان میں کرونا وائرس کے 51 نئے کیسوں کا انکشاف ہوا (یہ کئی ہفتوں میں ایک روز کے اندر متاثرین کی سب سے بڑی تعداد ہے) اسی روز حزب اللہ کے حمایت یافتہ لبنانی وزیر صحت حمد حسن لوگوں کے کندھوں پر چڑھ کر "کرونا کی وبا" کے خلاف اپنی "کامیابی" کا جشن منا رہے تھے۔ لبنانی وزیر بعلبک کے علاقے میں اپنے قصبے میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد کے درمیان موجود تھے۔

اس وڈیو کلپ نے لبنان میں عوامی حلقوں کو حیران کر ڈالا ہے۔ بالخصوص جب کہ وزارت صحت اور متعلقہ ادارے ابھی تک شہریوں کو ہدایات دے رہے ہیں کہ وہ کرونا سے بچنے کے لیے حفاظتی تدابیر کی مکمل پابندی کریں اور ہر طرح کے اجتماع اور اختلاط سے گریز کریں۔ موصوف لبنانی وزیر خود کئی ماہ سے عوام کو مذکورہ ہدایات دیتے ہوئے نہیں تھک رہے۔ وزیر صحت یہ باور کراتے ہیں کہ لبنان کرونا وائرس کی وبا کا مقابلہ کرنے کے منصوبے میں کامیاب ہو گیا۔

لبنان میں وائرل ہونے والی اس وڈیو پر شہریوں اور سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے وسیع پیمانے پر تنقید اور تضحیک سامنے آ رہی ہے۔

اس سے قبل لبنانی وزیر صحت حمد حسن اپنے اعزاز میں منعقد ایک تقریب میں یہ کہہ چکے ہیں کہ "وزارت صحت نے اپنی صلاحیتوں کی کمزوری کے باوجود دنیا کے سامنے ایک بہترین نمونہ پیش کیا۔ ہم نے قائل کر دیا کہ جو کچھ ہم کر رہے ہیں وہ درست ہے۔ اب بھی دیکھ لیں کہ ایک روز میں سامنے آنے والے 51 کیسوں میں سے 32 افراد بیرون ملک سے آنے والے ہیں۔