.

'فائزر۔ بائیونٹک' کرونا ویکسین وبا کے خلاف غیرمعمولی طور پر موثر ثابت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دنیا میں اس وقت کرونا وبا کی روک تھام کے لیے کئی طبی کمپنیوں نے ویکسین تیار کی ہے۔ ان میں بعض زیادہ موثر اور فعال ثابت ہونے کی تصدیق بھی کی گئی ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق امریکی کمپنی'فائز' اور جرمن 'بائیونٹک' کمپنیوں کی ویکسین کرونا وبا کے خلاف موثر ثابت ہوئی ہے۔

اسرائیل میں ایک سائنسی مطالعے کے دوران انکشاف کیا گیا ہے کہ 'فائزر ۔ بائیونٹک' کے فارمولے کے تحت تیار کی گئی ویکسین غیرمعمولی طور پر موثر رہی ہے۔ اسرائیل میں تیار ہونے والی یہ رپورٹ 'بلومبرگ' نے شائع کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ فائزر ۔ بلومبرگ فارمولہ کافی کامیاب رہا ہے۔ اسرائیل میں 20 دسمبر سے کرونا ویکسین لگانے کا عمل جاری ہے۔ یہ ویکسین شہریوں میں کرونا وبا کے خلاف قوت مدافعت بڑھانے اور شہریوں کی جانوں کے تحفظ کے لیے کافی موثر ثابت ہوئی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یہ ویکسین 89 اعشاریہ 4 فی صد فعال ثابت ہوئی ہے۔ اس تحقیق کے نتائج میں نے اشارہ کیا کہ یہ ویکسین لیبارٹری سے تصدیق شدہ ہےاور انفیکشن کی روک تھام میں 89.4 فیصد موثر رہی ہے۔ ٹویٹر پلیٹ فارم پر ایک ٹویٹ میں شائع ہونے والے ڈرافٹ کی ایک نقل کی تصدیق ایک باخبر شخص نے کی ، جس میں بتایا گیا ہے کہ فائزر اور بائیونٹک نے وبا کی روک تھام میں فعال کردار ادا کیا۔ دونوں کمپنیوں‌نے اسرائیلی وزارت صحت کے ساتھ بھرپور تعاون کیا۔ جرمن اخبار'دیر اسپیگل' کے مطابق اسرائیل کا شمار ان ممالک میں ہوتا ہے جنہوں‌ نے پہلی فرصت میں ویکسین لگوانے کا عمل شروع کردیا تھا۔ اسرائیل تقریبا اپنی نصف آبادی کو کرونا کی پہلی خوراک دے چکا ہے۔

ادھر اسرائیلی حکام نے کہا ہے کہ فائزر اور بائیونٹک ویکسین قریبا 99 فی صد فعال رہی ہے اور بیماری کا شکار ہونے والے افراد کو موت سے بچانے میں ان ویکسینوں‌ نے اہم کردار ادا کیا ہے۔