لبنان میں نئی حکومت کی تشکیل کا وقت آگیا: حسن نصراللہ

تمام سیاست دان ذاتی مطالبات بالائے طاق رکھ دیں اور سیاسی تعطل دورکرنے میں کردارادا کریں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

لبنان کی طاقتور شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے لیڈر حسن نصراللہ نے کہا ہے کہ ملکی سیاست دان اپنے ذاتی مطالبات کو پس پشت ڈال دیں اور نئی حکومت کی تشکیل کا عمل مکمل ہونے دیں تاکہ وہ ملک کو درپیش مالیاتی بحران سے نکال سکے۔

حسن نصراللہ نے بدھ کو ایک نشری تقریر میں کہا ہے کہ ’’ہرکسی کو یہ بات جان لینی چاہیے کہ لبنان کے پاس اب وقت نہیں رہا ہے۔‘‘ انھوں نے کہا کہ ’’حالیہ دنوں میں نئی کابینہ کی تشکیل میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے اور سیاسی تعطل کے خاتمے کے لیے سنجیدہ اجتماعی کاوشیں کی گئی ہیں۔‘‘

واضح رہےکہ لبنان میں گذشتہ قریباً چھے ماہ سے کوئی فعال حکومت نہیں ہے اور ایک عبوری حکومت ملک کا نظم ونسق چلا رہی ہے۔لبنانی صدر میشال عون نے گذشتہ سال اکتوبر میں سعد الحریری کو دوبارہ وزیراعظم نامزد کرکے نئی حکومت بنانے کی دعوت دی تھی مگر اب تک وہ نئی کابینہ تشکیل نہیں دے سکے ہیں۔

ان کے صدر میشال عون کی جماعت فری پیٹریاٹک موومنٹ (ایف پی ایم ) سے حکومت کی تشکیل کے معاملے پر اختلافات چلے آرہے ہیں۔اس کے علاوہ لبنان کی دوسری بڑی مسیحی جماعت ،سمیر جعجع کے زیر قیادت لبنانی فورسز نے سعد الحریری کی وزارت عظمیٰ کے لیے نامزدگی کی حمایت نہیں کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں