سعودی عرب : تین بیٹیوں کو ذبح کرنے والے باپ کی سزائے موت پر عمل درامد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں وزارت داخلہ کی جانب سے مکہ مکرمہ صوبے میں سعودی شہری بندر بن علی الزہرانی کی سزائے موت پر عمل درامد کرتے ہوئے اس کا سر قلم کر دیا گیا۔ مذکورہ شہری نے 2018ء میں تیز دھار چھرے کے ذریعے اپنی تین بیٹیوں کا گلا کاٹ دیا تھا۔ مقتول بچیوں کی عمریں بالترتیب چھ ، چار اور دو سال تھیں۔

مجرم کے خلاف عدالتی کارروائی پوری کی گئی۔ عدالت نے مجرم کو تعزیراتی طور پر سزائے موت سنائی۔ عدالتی فیصلے پر آج 16 مارچ بروز بدھ عمل درامد کرتے ہوئے مجرم بندر بن علی بن محمد الزہرانی کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق چند برس قبل جب یہ دل خراش واقعہ پیش آیا تو سعودی شہری کی افریقی شہریت کی حامل بیوی ہذیانی کیفیت کا شکار ہو کر ہسپتال میں داخل ہو گئی تھی۔ ذرائع کے مطابق یہ مجرمانہ واقعہ گھریلو لڑائی کے سبب واقع ہوا۔

سعودی شہری بندر کو فوری طور پر گرفتار کر لیا گیا۔ بعد ازاں یہ بات سامنے آئی کہ 33 سالہ مجرم منشیات کا عادی تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں