ایرانی ملیشیا

ایرانی حکام نے اسمگل شدہ ایندھن لے جانے والا جہاز قبضے میں لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ایران کی نیم سرکاری خبر رساں ایجنسی "تسنیم" نے اطلاع دی ہے کہ ایرانی حکام نے ایک بحری جہاز کو قبضے میں لے لیا جس پر 106,500 لیٹر اسمگل شدہ ایندھن لادا گیا ہے۔ ایرانی حکام نےجہاز کے عملے کے نو ارکان کو گرفتار کر لیا گیا۔ صوبہ ہرمزگان کے چیف جسٹس نے کہا ہے کہ "قشم پراسیکیوٹر کے حکم پر 106,500 لیٹر اسمگل شدہ ایندھن لے جانے والے جہاز کو دیکھنے کے بعد نیول بیس کے افسران نے اسے قبضے میں لینے کا عمل شروع کیا۔

بڑی سبسڈی اور اس کی کرنسی کی گراوٹ کی وجہ سے ایران میں ایندھن کی قیمت دنیا میں سب سے سستی ہے۔ وہ زمینی راستوں سے پڑوسی ممالک اور سمندر کے ذریعے عرب خلیجی ریاستوں کو ایندھن کی بے تحاشہ اسمگلنگ کا مقابلہ کر رہا ہے۔

ایران اکثر ایسے بحری جہازوں کو پکڑتا رہا ہے جو اس کے بقول خلیج میں تیل کی اسمگلنگ کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔ دو روز قبل ایرانی پاسداران انقلاب نے دو یونانی بحری جہازوں (پروڈینٹ اور ریور، اور ڈیلٹا پوسیڈن) کو اس وقت قبضے میں لینے کی تصدیق کی جب وہ خلیج فارس کے علاقائی پانیوں میں سمندری قوانین کی مبینہ خلاف ورزی کرتے ہوئے سفر کر رہے تھے۔

گذشتہ ہفتے یونان کے قریب ایک ایرانی آئل ٹینکر کو پکڑے جانے اور اس کے سامان کی ضبطی کے ردعمل میں تہران نے ایتھنز کو سزا دینے کی دھمکی دی تھی۔ ایران کی سرکاری خبر رساں ایجنسی تسنیم نے باخبر ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ پاسداران انقلاب نے خطے میں موجود 17 یونانی ٹینکرز کو بھی قبضے میں لینے کی دھمکی دی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں