دوران پروازطیارے میں آگ لگنے کی ویڈیو: کیا یہ سچ ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

گذشتہ چند گھنٹون کے دوران سوشل میڈیا پرایک ایسے ہوائی جہاز کی ویڈیو جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی جسے دوران پرواز آگ کے شعلوں کی لپیٹ میں دیکھا جا سکتا ہے۔

بہ ظاہر یہ ایک عمانی ہوائی جہاز ہے جس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر گردش کر رہی تھی۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ہوائی جہاز کے دونوں پروں کے درمیان انجنوں میں آگ بھڑک رہی ہے جب کہ پائلٹ نے طیارے کو بہ حفاظت اتار لیا۔

تاہم جب اس کی چھان بین اور تحقیق کی گئی تو یہ واضح ہو گیا کہ کلپ کو کمپیوٹر پروگرام کے ذریعے تیار کیا گیا ہے۔ حقیقت میں ایسا کوئی واقعہ پیش نہیں آیا ہے۔

اس نوعیت کی درجنوں افواہوں کے بعد یہ دعویٰ کیا گیا کہ ایک عمانی طیارے کو اس کے سوڈانی نژاد پائلٹ کیپٹن صالح محمود فتحی متولی نے اپنی مہارت سے زمین پر اتارا اور تمام مسافروں کو بہ حفاظت باہر نکال دیا۔

سعودی انسداد افواہ سازی اتھارٹی نے تصدیق کی ہے کہ عمانی طیارہ ہوا میں جل رہا ہے کے عنوان سے دوبارہ گردش کرنے والی ویڈیو بالکل درست نہیں ہے۔

اس نے وضاحت کی کہ اصلی ویڈیو ایک "فلائٹ سمولیشن پروگرام" کے ذریعہ تیار کی گئی تھی جسے (X-Plane) کہتے ہیں۔

بتایا جاتا ہے کہ ویڈیو کا اصل ورژن یوٹیوب چینل پر جنوری 2020 میں پوسٹ کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں