سعودی شہریوں کو بیرون ملک بغیر دستاویز شادی پر انتباہ، ایک لاکھ ریال جرمانہ ہوسکتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے غیر ملکی سے بغیر دستاویز شادی کرنے کا جرمانہ بڑھا کر ایک لاکھ ریال تک کردیا۔

سعودی خاتون وکیل شائمہ الثقفی نے تصدیق کی کہ کہ کسی غیر ملکی خاتون سے بغیر دستاویز شادی کرنے کی صورت میں جرمانہ ایک لاکھ ریال تک ہو سکتا ہے۔

ایم بی سی کے پروگرام میں انٹرویو دیتے ہوئے شائمہ الثقفی نے خبردار کیا کہ کچھ سعودیوں کو بیرون ملک میں ایجنٹس ایک ہفتہ کیلئے بے ترتیب شادی کیلئے مجبور کرتے ہیں جو ایک غیر قانونی ہے۔

انہوں نے کہا شادی کے معاملہ کو آسان بنائے جانے کی آڑ میں دھوکہ مت کھائیے۔ شادی زندگی، مستقبل، خاندان اور بچوں کی منصوبہ بندی کا ایک معاہدہ ہوتا ہے ۔ اس کو منصوبہ بندی اور ضوابط کے بغیر کرنا خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔ اس طرح کی شادیوں کے منفی سماجی اور معاشی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

انہوں نے کہا ۔صرف تفریح کی غرض سے ایک ہفتہ کیلئے کی جانے والی شادی کے خطرناک اثرات مرتب ہوسکتے ہیں، ان شادیوں کا لالچ دیکر دھوکہ دہی اور بھتہ خوری کی جاتی ہے۔ اس طرح کی شادی میں ملوث افراد کو متعلقہ اداروں کے سپرد کیا جائے گا۔ انہوں نے زور دیا کہ شادی کو سرکاری طریقے سے دستاویز کرنا انتہائی ضرروی ہے ورنہ سزا کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

اسی حوالے سے بیرون ملک سعودی خاندانوں کی دیک بھال کرنے والے خیراتی ادارے ’’ اواصر‘‘ ایسوسی ایشن کے سربراہ ڈاکٹر توفیق السویلم نے بھی خبردار کیا کہ بہت سے ممالک میں جانے والے سعودیوں کو خبردار رہنا ہوگا، ان ملکوں میں سعودی سعودی سیاحوں کو ائیر پورٹ پر ہی شادی کے طریقہ کار کو اسان بنانے کی ترغیب دی جاتی ہے اور 50 سے لیکر 100 ڈالر تک کی معمولی فیس پر شادی کرانے کی پیش کش کردی جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں