لبنانی صدر میشل عون صدارتی مدت پوری ہونے کے بعد ایوان صدر سے الوداع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان کے صدر میشل عون نے اتوار کے روز ایوان صدر کو چھوڑ دیا ہے۔ وہ اس منصب سے سبکدوش ہونے کے بعد پیدل چلتے ہوئے ایوان صدر سے باہر آئے اور قومی ترانے کے بعد لوگوں سے خطاب کیا ۔

ان کی چھ سالہ صدارتی مدت گذشتہ روز 30 اکتوبر 2022 کوختم ہوگئی تھی۔ تاہم ابھی ان کے جانشین کا فیصلہ نہیں ہو سکا ہے۔ وہ صدارت سے ایسے حالات میں سبکدوش ہوئے جب ملک معاشی اعتبار سے سخت کمزور حالت میں ہے۔

اس صورت حال میں ان کے جانشین کا انتخاب بھی نہیں ہو سکا ۔ اب کایبنہ ہی ان کے منصب کو ایک نگران کے طور پر چلائے گی۔ سابق ہونے والے صدر کے حامیوں نے ایک بڑے سے قومی پرچم کے ساتھ ان کا خیر مقدم کیا۔

89 سالہ میشل عون کے دور صدارت میں لبنان کی معاشی بد حالی اپنی انتہا پر رہی ، نیز انہی کے دور میں لبنان کی بندر گاہ پر خوفناک اور تباہ کن دھماکہ ہوا تھا۔

لبنانی پارلیمنٹ ابھی تک متفق نہیں ہو سکی کہ ان کا جانشین کون ہو گا۔ قانون سازی کے معاملات میں کسے دستخط کرنے کا اختیار حاصل ہوگا۔ کون نیا وزیر اعظم مقرر کرے گا اور کس کو یہ اختیار حاصل ہو گا کہ وہ حکومت سازی کے لیے وزیر اعظم کو گرین سگنل دے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں