اسرائیل کے نیتن یاہو کا دورہ امریکہ کا اعلان، بائیڈن سے ملاقات متوقع نہیں

نیتن یاہو کے گذشتہ سال کے آخر میں دوبارہ انتخاب کے بعد اسرائیل کے دیرینہ اتحادی امریکہ کا پہلا دورہ ہوگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو رواں ماہ امریکہ کا دورہ کریں گے، ان کے دفتر نے اتوار کو اعلان کیا، لیکن ان کی صدر جو بائیڈن سے ملاقات کی توقع نہیں ہے۔

نیتن یاہو کے گذشتہ سال کے آخر میں دوبارہ انتخاب کے بعد اسرائیل کے دیرینہ اتحادی امریکہ کا پہلا دورہ ہوگا۔

اسرائیلی وزیر اعظم 18ستمبر کو سلیکون ویلی میٹنگز کے لیے سان فرانسسکو پہنچیں گے، اس سے پہلے نیویارک روانہ ہوں گے، جہاں وہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں شرکت کریں گے۔ اس امر کا اعلان یاہو کے دفتر سے جاری ایک بیان میں کیا گیا ہے۔

نیتن یاہو کے ترجمان نے کہا کہ دورے کے دوران امریکی حکام سے ملاقات کا کوئی منصوبہ نہیں۔

بائیڈن نے عدالتی اصطلاحات کے منصوبے پر تنقید کی ہے جس پر نیتن یاہو کی سخت گیر حکومت آگے بڑھ رہی ہے، جسے ناقدین اسرائیل میں جمہوریت کے لیے خطرہ قرار دیتے ہیں۔

امریکی صدر نے حال ہی میں اسرائیلی صدر اسحاق ہرتصوغ کی میزبانی کی۔ تاہم نیتن یاہو کو دسمبر میں اقتدار میں واپسی کے بعد سے ابھی تک وائٹ ہاؤس میں مدعو کیا جانا باقی ہے جسے بائیڈن نے اسرائیلی تاریخ کی "انتہائی انتہا پسند" انتظامیہ میں سے ایک قرار دیا تھا۔

جولائی میں، وائٹ ہاؤس نے مزید تفصیلات فراہم کیے بغیر کہا تھا کہ بائیڈن اور نیتن یاہو "اس سال کے آخر میں امریکہ میں ملاقات کریں گے۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں