فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ پر زمینی حملے پر دوسرے مزاحمتی جنگجو بیٹھے نہیں رہیں گے: حزب اللہ نائب سربراہ

زمینی جنگ شروع ہوئی تو مزاحمت کار اسرائیلیوں کا قبرستان بنادیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

حزب اللہ کے نائب سربراہ نے کہا ہے کہ حزب اللہ اسرائیل اور حماس کی جنگ کے مرکز میں موجود ہے۔ 'ہماری اطلاعات کے مطابق حماس اور مزاحمتی جنگجووں کی تیاری زبردست ہے اس لیے اسرائیل نے غزہ پر زمینی حملے کی کوشش کی تو جنگجو اسرائیلیوں کا قبرستان بنا دیں گے۔

حزب اللہ کے اعلیٰ رہنما نے کہا اسرائیل نے غزہ پر جب بھی زمینی حملہ کیا اسرائیل کو اس حملے کی بہت بھاری قیمت چکانا پڑے گی۔ حزب اللہ کے رہنما لبنان میں بات چیت کر رہے تھے۔ ان کا کہنا تھا 'ہم تو پہلے ہی اسرائیل اور حماس کی جنگ کے مرکز میں موجود ہیں۔'

حزب اللہ کے ڈپٹی لیڈر شیخ نعیم قاسم نے یہ بات اس وقت کہی جب اسرائیل جنوبی لبنان پر شیلنگ کی اور حزب اللہ نے اسرائیل پر راکٹ اور میزائل پھینکے۔

ان کا کہنا تھا ' لبنان اور اسرائیل کی سرحدوں کو گرم کرنا حزب اللہ کے لیے ایک واضح مقصد کی بنیاد ہے۔ ہم اسرائیلی دشمن کو کمزور کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ تاکہ وہ جان لیں کہ ہم تیار ہیں۔'

دوسری جانب حماس کے عہدے دار نے کہا ہے کہ اسرائیل نے غزہ پر زمینی حملہ شروع کیا تو حزب اللہ جنگ میں باقاعدہ شامل ہو جائے گی۔

خیال رہے جب سے اسرائیل اور حماس کی جنگ شروع ہوئی ہے لبنان اسرائیل سرحد پر فائرنگ کا تبادلہ دو ہفتوں سے زیادہ ہو گیا ہے۔

اسرائیل کو پریشانی ہے کہ ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ کے پاس آتشیں اسلحے میں مختلف قسم کے ڈرون اور میزائل بھی موجود ہیں۔ اس لیے اسرائیل کے لیے غزہ کے علاوہ شمال کی جانب سے بھی ایک محاذ کھل سکتا ہے۔

شیخ نعیم قاسم نے حزب اللہ کے ایک جنگجو کے جنازے کے موقع پر اپنی تقریر میں اسرائیل کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ' کیا تم سمجھتے ہو کہ تم فلسطینی مزاحمت کو کچلنے کی کوشش کرو گے تو دوسرے مزاحمتی جنگجو کچھ نہیں کریں گے؟ ہم آج کی جنگ کے بھی مرکز میں ہیں۔ ہم اس جنگ کے ذریعے کامیابی حاصل کر رہے ہیں۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں