جنوبی لبنان کے قصبوں پر اسرائیلی فضائی حملے اور توپ خانے سے گولہ باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے منگل کے روز کہا ہے کہ اس نے لبنان میں ایک "سیل" پر حملہ کیا جس نے شمالی اسرائیل میں شتولا کے مقام پر ٹینک شکن میزائل فائر کرنے کی کوشش کی۔

اس سے قبل ایک اسرائیلی ڈرون نے جنوبی لبنان میں نبطیہ کے علاقے میں واقع سرحدی قصبے محبیب کے مضافات میں حملہ کیا۔

بتایا گیا ہے کہ الضہیرہ اور طیر حرفا کے علاقوں کو توپ خانے کی گولہ باری کا نشانہ بنایا گیا، جبکہ اسرائیلی جنگی طیاروں نے علی الصبح ناقورہ قصبے کے قریب جبل البابونح پر حملہ کیا، جب کہ جاسوس طیاروں نے طیرہ اور سمندری ساحل پر پرواز کی۔

اسرائیلی فوج نے مروحین اور رامیا کے مضافات میں توپ خانے سے تین حملے کیے۔

طیر شہر کے جنوب میں میزائلوں کے 16 خالی پلیٹ فارم ملے ہیں جنہیں گذشتہ روز مقبوضہ فلسطین کی جانب میزائل داغنے کے لیے استعمال کیا گیا تھا۔

سوموار کی شام اسرائیلی فوج کے ترجمان اویچائی ادرعی نے لبنان کے اندر حزب اللہ کے ٹھکانوں پر نئے فضائی حملوں کا اعلان کیا۔ ادرعی نے کہا کہ جنگی طیاروں نے اس سے قبل لبنان سے اسرائیل کی طرف راکٹ داغنے کے جواب میں گروپ کے اہداف پر حملہ کیا، جہاں اسرائیلی فوج کی طرف سے توپ خانے کی گولہ باری بھی کی گئی۔

کل پیر کو حماس تحریک کے عسکری ونگ عزالدین القسام بریگیڈ نے جنوبی لبنان سے شمالی اسرائیل اور حیفا شہر کے جنوب کی طرف 16 راکٹ داغنے کا اعلان کیا تھا۔

انہوں نے ایک بیان میں کہا کہ "القسام بریگیڈز نے لبنان سے غزہ کی پٹی میں ہمارے لوگوں کے خلاف قابض کے قتل عام اور جارحیت کے جواب میں شمالی مقبوضہ فلسطین کے مقبوضہ نہاریہ اور جنوبی حیفا کے علاقوں پر 16 راکٹ داغے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں