فلسطینی ریاست کے قیام سے قبل غزہ میں عبوری سیٹ اپ پر غور کررہے ہیں: انٹونی بلنکن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے بدھ کے روز اعلان کیا ہے کہ اسرائیل غزہ کی پٹی کا انتظام نہیں سنھبالے گا، لیکن موجودہ لڑائی کے خاتمے کے بعد ایک عبوری دور ہو سکتا ہے، جس کا اختتام فلسطینی ریاست کے قیام کے ساتھ ہو گا۔

بلنکن نے ٹوکیو میں جی 7 وزرائے خارجہ کی میٹنگ کے بعد صحافیوں کو بتایا کہ "اب حماس غزہ کا مزید کنٹرول نہیں سنھبالے گی۔ ورنہ اس سے 7 اکتوبر کو ہونے والے واقعات کو دہرانے کی راہ ہموار ہوسکتی ہے۔ یہ بھی واضح ہے کہ اسرائیل غزہ پر قبضہ نہیں کر سکتا"۔

انہوں نے مزید کہا کہ "اب حقیقت یہ ہے کہ جنگ کے اختتام پر کچھ عرصے کے عبوری دور کی ضرورت ہو سکتی ہے۔ ہمیں دوبارہ اسرائیلی قبضے کا خدشہ نہیں ہے۔میں نے اسرائیلی رہ نماؤں سے سنا ہے کہ ان کا غزہ پر دوبارہ قبضہ کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے"۔

بدھ کے روز بلنکن نے غزہ سے ابھی یا جنگ کے بعد فلسطینیوں کی جبری نقل مکانی کے کسی فارمولے کو مسترد کردیا تھا۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ غزہ کی پٹی کو دوبارہ اسرائیلی قبضے کا نشانہ نہیں بنایا جائے گا اور نہ ہی اس کے رقبے میں کوئی کمی کی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ حقیقت پسندانہ معاملہ یہ ہے کہ فلسطینی عوام ہی غزہ میں حکومت کے حق دار ہیں۔

اس ہفتے امریکی نائب صدر کملا ہیریس نے امارات کے صدر الشیخ محمد بن زاید اور بحرین کے ولی عہد شہزادہ سلمان بن حمد آل خلیفہ کے ساتھ فون پر بات کرتے ہوئےاس بات پر زور دیا تھا کہ غزہ سے فلسطینیوں کو زبردستی بے گھر نہ کیا جائے۔

وائٹ ہاؤس نے ایک بیان میں کہا کہ ہیرس نے "فلسطینیوں کے حق خودارادیت" کی حمایت کی اور شہریوں تک انسانی ہمدردی کی بنیاد پر رسائی کو آسان بنانے اور شہریوں کی زندگیوں کے تحفظ اور بین الاقوامی انسانی قانون کا احترام کرنے کی اہمیت پر زور دیا۔"

اس سے قبل بدھ کو وائٹ ہاؤس نے کہا تھا کہ غزہ میں جنگ بندی کے لیے یہ وقت مناسب نہیں ہے۔ وہ مخصوص مدت اور مقاصد کے لیے جنگ بندی کا خواہاں ہے مگر مستقل جنگ بندی کا امکان نہیں۔

وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی کے ترجمان جان کربی نے کہا کہ حماس غزہ میں حکومت کا حصہ نہیں بنے گی۔ انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ واشنگٹن اسرائیل کے ساتھ اس بارے میں بات چیت کر رہا ہے کہ غزہ میں جنگ کے خاتمے کے بعد کیسا انتظام ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں