زمانہ جاھلیت کے شاعر طرفہ بن العبد 1450 سال بعد اپنے آبائی علاقے الاحساء میں نمودار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

سعودی عرب کے علاقے الاحساء میں مشہور شاعر طرفہ بن العبد اور ان کے فن کےبارے میں ایک میلےکا انعقاد کیا جا رہا ہے جس میں ڈیڑھ ہزار سے قبل گذرے شاعر کو ایک ڈرامے کے انداز میں پیش کرنے کے علاوہ کئی دوسرے پروگرامات شامل ہوں گے۔

جب آپ سعودی عرب کے علاقے الاحساء میں پہنچتے ہیں تو آپ کے کانوں میں ایک آواز سرگوشی کے انداز میں گونجتی ہے’ لِخَولَةَ أَطلالٌ بِبُرقَةِ ثَهمَدِ‘۔ یہ الفاظ زمانہ جاھلیت کے عرب شاعر طرفہ بن العبد کے اس مشہور قصیدے کے ہیں جو’سبع معلقات‘ کاحصہ تھا۔

الاحساء آج کی سعودی مملکت کا حصہ جو کسی زمانے میں شاعر متغزل طرفہ بن العبد کا مسکن تھا۔ آج سے 1450 قبل طرفہ بن العبد اسی جگہ پیدا ہوئے اور اپنی مسحور کن شاعری سے اپنے دور اور آنے والے زمانوں کو متاثر کیا۔

حال ہی میں سعودی عرب کی وزارت ثقافت نے الاحساء میں "طرفہ بن العبد" فیسٹیول "عرب شاعری کا سال 2023" اقدام کے پروگراموں اور سرگرمیوں کا انعقاد کیا۔

اس میلے کا مقصد طرفہ بن العبد کی شاعری کو زندہ کرنا اور قدیم عربی لٹریچر سے قوم کو روشناس کرنا ہے۔

میلے کے ہر کونے نے اپنی مشہور نظموں کے بارے میں ایک کہانی سنائی اور ایک شاندار ثقافتی تناظر میں ایک بھرپور اور تخلیقی سفر کو اجاگر کیا گیا۔

ثقافتی سفر

ثقافتی سفر کے عنوان سے شاعر کی یاد میں منعقدہ پروگرام میں چلڈرن زون بھی شامل ہے تفریحی عنصر کو تعلیم کے ساتھ ملانے، بچوں کی حسی فنکارانہ مہارتوں کو بڑھانے، ان تک روایتی فنون کو آسان طریقے سے پہنچانے پر توجہ مرکوز کرتا ہے۔ اس کے علاوہ اس کے علاوہ متعدد تعلیمی تجربات فراہم کرتا ہے۔

اپنے پیارے خولہ کے ساتھ ایک مزاحیہ کردار
اپنے پیارے خولہ کے ساتھ ایک مزاحیہ کردار

ایک گوشے میں رنگین دیوار تیار کی گئی ہے جس میں شاعر کی دنیا سے اپنی ڈرائنگ کے ساتھ ساتھ عربی خطاطی، شاعر کے ماحول کی ڈرائنگ، فوٹو گرافی کارنر، شیڈو پلے تھیٹر، ریت کا ایک گوشہ، شعرگوئی کے علاوہ بچوں کو سامعین کے سامنے نظمیں سنانے کی بنیادی باتیں اور ان کی لسانی روانی سکھانا جیسے پروگرامات شامل ہیں۔

جہاں تک ’پوئٹس تھیٹر‘ کا تعلق ہے اس میں شاعر کی زندگی سے متعلق موضوعات سے متعلق چار علمی سمپوزیم اور پانچ شعری شاموں کا انعقاد دیکھا جائے گا جس میں مشرقی خطے کے شاعروں کا ایک مخصوص گروپ حصہ لے گا۔

اس دوران ایک ڈرامہ بھی پیش کیا جائے گا جس میں شاعر کی سوانح اور شاعری سے متعلق معلومات کو ڈرامائی انداز میں پیش کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ اس میں شاعر کی شخصیت اور نظموں ، زمانہ جاہلیت میں زندگی کی نوعیت کے عمومی ماحول ، فیشن، زبان اور ڈرامے کے عناصراور قدیم عربی شاعری اور جزیرہ نما عرب کے شاعروں میں ثقافتی اور تخلیقی سرمایہ کاری کے طریقہ کار کو اجاگر کیا جائے گا۔

ترفہ بن العبد فیسٹیول کے ملبوسات
ترفہ بن العبد فیسٹیول کے ملبوسات

"شاعر کی دنیا" کے علاقے میں زائرین کو شاعر کے لیے وقف ایک نمائش بھی ملے گی، جس میں طرفہ بن العبد کا ماڈل، شاعر کے خاندانی درخت، ایک ڈرائنگ اور شاعر کا جغرافیہ بھی شامل ہے۔

طرفہ بن العبد کون ہیں؟

قابل ذکر ہے کہ شاعر طرفہ بن العبد کا شمار اسلامی دور سے پہلے کے قدیم دور کے سب سے زیادہ ہنر مند شاعروں میں ہوتا ہے۔

ان کا نام عمرو بن العبد بن سفیان بن سعد بن مالک بن ضعبہ البکری ہے اور وہ کم عمری سے ہی تیز ذہانت اور پاکیزگی فکر کے اعتبار سے منفرد خصوصیات کے حامل رہے ہیں۔

طرفہ بن العبد چھوٹی عمر میں یتیم ہوگئے اور چچا کی پرورش میں رہے، مگران کے چچا نے ان سے نا انصافیاں کیں اورن کے والد کی میراث بھی ان سے چھین لی۔ یہی وجہ ہے کہ ان کی شاعری میں ان کی بے گھری اور بغاوت کے آثار نمایاں دیکھے جا سکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں