فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیلی یرغمالی کی گاڑی غزہ کے انڈونیشی ہسپتال سے ملنا ہسپتال کو جنگجووں سے جوڑتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ ایک اسرائیلی یرغمالی کی گاڑی کا غزہ میں قائم انڈونیشی ہسپتال سے ملنے کا واقعہ جنگجووں اور انڈونیشیا کے ہسپتال کے درمیان تعلقات کو واضح کرتا ہے۔ شمالی غزہ میں کام کرنے والے انڈونیشی ہسپتال میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے کی گاڑی اسرائیلی فوج نے ہسپتال سے ملنے کا دعویٰ کیا ہے۔

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے انڈونیشی ہسپتال سے سمیر الطلقاء کے خاندان کی اسرائیلی نمبر پلیٹ کی گاڑی ملی ہے۔ واضح رہے الطلقاء ان تین یرغمالیوں میں شامل تھے جنھیں اسرائیلی فوج نے غلط شناخت کی وجہ سے ہلاک کر دیا تھا۔

جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ گاڑی میں راکٹ سے چلنے والے دستی بم آر پی جی کی باقیات ملی ہیں۔ گاڑی میں خون کے دھبے میں پائے گئے جن کے بارے میں اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ یہ ایک اور یرغمالی کے ہیں۔

اسرائیلی فوج کے بیان میں مزید کہا گیا کہ انڈونیشی ہسپتال سے گاڑی کا ملنا ہسپتال کو 7 اکتوبر کے واقعات سے جوڑتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں