ارجنٹائنی یہودی کا نفرت انگیز بیان جس کی یہودی بھی مذمت کر رہے ہیں

خود کو صہیونی قرار دینے کا دعویٰ کرنے والے ارجنٹائنی یہودی کی غزہ کے باشندوں کو قتل کرنے کی ترغیب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ارجنٹائن کے ایک شدت پسند یہودی کی جانب سے غزہ کی پٹی کے بیشتر باشندوں کو قتل کرنے کی ترغیب دینے پر مسلمان اور عرب تارکین وطن کی طرف سے سخت رد عمل سامنے آیا ہے۔

غزہ میں اسرائیل کی طرف سے شروع کی گئی جنگ کے 100 دنوں میں 22 ہزار سے زاید فلسطینیوں کو موت کی نیند سلا دینے کے بعد بھی ارجنٹائنی یہودی کا غصہ ٹھنڈہ نہیں ہوا بلکہ وہ فلسطینیوں کے خلاف مسلسل زہرافشانی کر رہا ہے۔

"مشرق وسطی کے کلکتہ" یا غزہ میں حماس کے خلاف اسرائیل کی جنگ کے 100 دنوں سے بھی کم عرصے میں 22 ہزار سے زیادہ فلسطینی شہری جن میں زیادہ تر بچے اور خواتین شامل ہیں کی ہلاکت کے باوجود اس طرح کے اشتعال انگیز بیانات پر مسلمان کمیونٹی کی طرف سے رد عمل فطری ہے۔ تاہم کسی یہودی کی طرف سے اس طرح کے خونی الفاظ کوئی اچنبے کی بات نہیں کیونکہ انتہا پسند یہودیوں اور صہیونیوں کی جانب سےسات اکتوبر کو حماس کے اسرائیل پر حملے کے بعد اس طرح کے بیانات معمول کا حصہ ہیں۔

پولش نژاد 56 سالہ سرجیو پیکلٹوز نے’ایکس‘ پلیٹ فارم پر اپنا تعارف "ڈیلیگیشن آف ارجنٹائن-اسرائیلی ایسوسی ایشنز" یا DAIA کے نائب صدر کے طور پر کیا۔ اس کے خیال میں یہ گروپ یہود دشمنی کا مقابلہ کرنے کے لیے سرگرم ہے۔اس کے بیان پر ارجنٹائن میں عرب اور مسلمان برادری میں شدید غم وغصے کی لہر دوڑا دی ہے۔ ارجنٹائن میں قریبا دس لاکھ کے قریب عرب تارکین وطن آباد ہیں۔

موصوف کے خلاف یہ غصہ صرف مسلمانوں تک محدود نہیں بلکہ ارجنٹائن کے ایک لاکھ 70 ہزار یہودی بھی سرجیو کے اشتعال انگیز بیان پر سخت برہم دکھائی دیتے ہیں۔

ارجنٹائن کے مسلمانوں ، عربوں حتیٰ کہ یہودیوں نے بھی اسے ایک خطرناک ہٹلر اور بڑے پیمانے پر خونریزی پر اکسانے والا شخص قرار دیتے ہوئے تنظیم کے عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کیا۔

’غزہ میں کوئی معصوم نہیں‘

اپنے ٹویٹ میں مشینوں، موٹرسائیکلوں اور تفریحی گاڑیوں کے سمپا گروپ کے لاطینی امریکا کے کمرشل ڈائریکٹر پیکلٹوزس نے کہا کہ "ہم اس بات کو دہراتے ہیں کہ غزہ میں کوئی معصوم شہری نہیں، شاید صرف چار سال سے کم عمر کے بچے ہیں۔ وہاں سب یہودیوں کے قاتل ہیں اور ہم ان پر غالب آئیں گے"۔

اس نے ساتھ ہی سات اکتوبر کے اسرائیل پر حماس کے حملے کے کچھ مناظر کی ایک ویڈیو نشر کی"۔

اس نےغزہ کی پٹی کی آبادی کےاجتماعی قتل عام کا مطالبہ کیا اورکہا کہ غزہ میں لوگوں پر تیزی سے حملہ کیا جائے۔ اس نے "ایکس" میں اپنا اکاؤنٹ تبدیل کرکے اسے محفوظ بنایا، تاکہ صرف وہی لوگ دیکھ سکیں جنہیں اسے دیکھنے کی اجازت دی ہے۔ تاہم العربیہ ڈاٹ نیٹ نے ارجنٹائن اور غیر ملکی میڈیا کے متعدد اداروں کےحوالے سےانتہا پسند یہودی کے متنازع موقف کی معلومات جمع کیں۔

ارجنٹائنی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق جس یہودی تنظیم ’ڈی اے آئی اے‘ میں وہ خود خدمات انجام دیتا ہے اس کے ارکان کی طرف سے بھی اس کے بیان پر سخت رد عمل سامنے آیا۔

ایک ارجنٹائنی یہودی نے اس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا DAIA ارجنٹائن کے معاشرے میں ہر اس شخص کے ساتھ کھڑی ہے جو نا انصافی کا شکار ہو۔اس نےسرجیو کے خلاف کارروائی کرنے کا وعدہ کیا۔

سرجیو پیکلٹوزس نے فلسطینیوں کے خون بہانے پر اکسانے کے لیے جو کچھ لکھا، وہ ایک ایسے وقت میں سامنے آیا جب ارجنٹائن کے نئے صدر جیویئر ملے، اسرائیل اور امریکا کے ساتھ اتحاد کے خواہاں ہیں۔ انھوں نے بارہا یہودی مذہب سے اپنی محبت کا اعلان کیا ہے۔ اسے قبول کرنے کی خواہش کا اظہار کیا اوراس سال ارجنٹائن کے سفارت خانے کو تل ابیب سے مقبوضہ یروشلم منتقل کرنے کی خواہش کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں