ایرانی جیل سے دو صحافی خواتین کی ضمانت پر رہائی کے بعد نئے مقدمے کا اندراج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

دو ایرانی خواتین صحافیوں کو 17 ماہ جیل میں گزرنے کے بعد عدالت نے اس وقت ضمانت پر رہائی دی تھی جب ان کی پہلے والے عدالتی فیصلے کے خلاف اپیل زیر سماعت تھی۔

نیلوفر حمیدی اور الہی محمدی کو بالترتیب ایرانی عدالت نے 13 اور 12 سال قید سنائی تھی۔ ان کا جرم تھا کہ انہوں نے 2022 ستمبر میں مہسا امینی کی پولیس حراست میں ہلاکت کے بعد شروع ہونے والے ہنگاموں کو اپنے اخبارات کو رپورٹ کیا تھا۔

ان دونوں خواتین کو اس مقدمے میں عدالت نے طویل سزائے قید دی تھی، وہ تب سے جیل میں قید تھیں۔ تاہم اسی ہفتے کے دوران انہیں عدالت نے ضمانت پر رہائی دی تھی۔ اب ان دونوں کے خلاف ایرانی ضابطہ لباس کی خلاف ورزی کرنے اور ننگے سر باہر نکلنے پر ان دونوں صحافی خواتین کے خلاف اخلاقی پولیس نے ایک اور مقدمہ درج کر دیا ہے۔

واضح رہے ستمبر 2022 میں بائیس سالہ مہسا امینی کی ایرانی اخلاقی پولیس کی حراست میں ہلاکت ہوئی تھی۔ مہسا امینی کو ایران میں خواتین کے لیے نافذ کیے گئے 'ڈریس کوڈ' کی خلاف ورزی پر گرفتار کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں