عراق کی سرحد پار کارروائی، داعش کے دو خطرناک ترین جنگجو گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراقی نیشنل انٹیلی جنس سروس نےکہا ہے کہ وہ سرحدوں کے باہر ایک آپریشن میں داعش کے دو "خطرناک ترین لیڈروں" کو گرفتار کرنے میں کامیاب رہی ہے۔

انہوں نے ایک بیان میں مزید کہا کہ جن دو ارکان کو گرفتار کیا گیا تھا وہ "عراق میں دہشت گردی کے سب سے گھناؤنے جرائم میں ملوث تھے اور انہیں ملک سے باہر گرفتار کر کے عراق لے جایا گیا‘‘۔

بیان میں وضاحت کی گئی ہے کہ ان میں سے ایک جنگجو کی شناخت عصام عبد علی سعیدان ہے کے نام سے کی گئی ہے جس کا عرفی نام "ابو زید" ہے اور وہ 2014 کے بعد فلوجہ میں داعش کی میڈیا سرگرمیوں کا ذمہ دار ہے۔

عراقی نیشنل انٹیلی جنس سروس نے ہفتے کے روز اعلان کیا کہ وہ سرحدوں کے باہر ایک کارروائی میں داعش کے دو خطرناک ترین رہنماؤں کو گرفتار کرنے میں کامیاب رہی ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ دوسرا بشیر عبدالعلی سعیدان ہے جس کا عرفی نام "ابو احمد اتصالات" ہے۔ وہ 2014 کے بعد فلوجہ میں "داعش‘‘ کی تمام دہشت گرد کارروائیوں کا ذمہ دار ہے اور وہ داعش کے مواصلات کو محفوظ اور خفیہ کرنے کا انچارج تھا"۔

کئی دن پہلے کاؤنٹر ٹیررازم سروس نے عراق میں داعش کے "مالی انتظامی اہلکار" کی گرفتاری کا اعلان کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں