غزہ میں فوری سیز فائر اور امدادی اشیاء بھجوائی جائیں: خلیج تعاون کونسل

تنازعہ کا حل فلسطینی ریاست کے قیام کے بغیر ممکن نہیں، غزہ کا بحران خطرناک علاقائی تنازعات کا باعث بن سکتا ہے: مصری وزیر خارجہ سامح شکری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

خلیج تعاون کونسل کے 159 ویں وزرائے خارجہ کونسل کا اجلاس ریاض میں اتوار کو ہوا۔ اجلاس میں خلیج تعاون کونسل اور مصر کے وزیر خارجہ سامح شکری، اردنی وزیر خارجہ ایمن صفادی اور مراکش کے وزیر خارجہ ناصر بوریتا کے درمیان مشترکہ وزارتی اجلاس ہوئے۔

اس موقع پر مصر کے وزیر خارجہ سامح شکری نے کہا ہے کہ غزہ میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ فلسطینی کاز کو ختم کرنے کا ایک منظم منصوبہ ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس تنازع کا سکیورٹی حل خطے میں تباہی کے سوا کچھ نہیں لایا اور غزہ میں کشیدگی بحیرہ احمر اور باب المندب تک پھیل گئی ہے۔

خلیج تعاون کونسل کے سیکرٹری جنرل جاسم محمد البدوی نے غزہ میں اسرائیل کی جانب سے بین الاقوامی انسانی قانون کی سنگین خلاف ورزیوں، خاص طور پر شہریوں کو مسلسل اور براہ راست نشانہ بنانے کی مذمت کرتے ہوئے جی سی سی ممالک کے اجتماعی موقف کو دہرایا۔

جاسم محمد البديوی جنرل سیکرٹری جی سی سی
جاسم محمد البديوی جنرل سیکرٹری جی سی سی

خلیج تعاون کونسل کے سیکرٹری جنرل نے جنگ بندی کی فوری ضرورت پر بھی زور دیا۔

جاسم البداوی نے جی سی سی کی جانب سے کسی بھی ایسے اقدام کو مسترد کرنے کی طرف بھی اشارہ کیا جس سے دریائے نیل کے پانی پر مصر کا حق متاثر ہو، انہوں نے دریا پر بننے والے ڈیم کے معاہدے تک پہنچنے کی ضرورت پر زور دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں