فلسطین اسرائیل تنازع

115 فلسطینیوں کی ہلاکت کا ذمہ دار اسرائیل اور انتہا پسند اسرائیلی ہیں:جوزپ بوریل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یورپی یونین کے خارجہ امور کے سربراہ بوریل نے حصول خوراک کے لیے قطار میں لگے فلسطینیوں میں سے 115 کی ہلاکت کا ذمہ دار اسرائیل و اسرائیلی انتہا پسندوں کو قرار دیتے ہوئے کہا یہ امداد غزہ تک پہنچنے سے روکتے ہیں اس لیے سانحے کے یہی ذمہ دار ہیں۔ انہوں نے اس سانحے کے حوالے سے باضاطہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

اس سلسلے میں یورپی یونین کے جوزپ بوریل کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے ' جمعرات کے روز ایک سو سے زائد فلسطینی اس وقت قتل کر دیے گئے جب وہ امدادی کارروائی سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنے اہل خانہ کے لیے خوارک حاصل کرنے کے لیے غزہ میں جمع تھے۔ ' ان کی طرف سے یہ بیان یورپی یونین کے شعبہ ' ایکسٹرنل ایکشن سروس' نے جاری کیا ہے۔

ان کے بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ 'اسرائیلی فوجیوں کی طرف سے فائرنگ کا کوئی جواز نہیں تھا کہ فلسطینی شہری صرف خوراک حاصل کرنے کے لیے جمع تھے۔' جوزپ بوریل نے کہا 'ان فلسطینیوں کی ہلاکت کی ذمہ داری اسرائیل اور ان اسرائیلی انتہا پسندوں پر عائد ہوتی ہے جو غزہ میں امداد کو پہنچنے میں رکاوٹ ڈالتی ہے۔ ان عناصر نے غزہ کے جنگ زدہ شہریوں میں بھوک کی وجہ سے یہ صورتحال پیدا کی اور بعدازاں تشدد کا اتنا بڑا واقعہ ہوگیا۔'

'ہم چاہتے ہیں کہ اس پر بین الاقوامی سطح پر تحقیقات کرائی جائیں کیونکہ خوراک حاصل کرنے والے فلسطینی شہریوں پر اسرائیلی فوج کی فائرنگ کا کوئی جواز نہیں تھا۔' انہوں نے پھر کہا 'اس واقعہ کی ذمہ داری اسرائیلی فوج اور انتہا پسند متشدد عناصر پر ہے جنہوں نے انسانی بنیادوں پر غزہ میں امدادی کارروائیوں میں رکاوٹیں پیدا کر رکھی ہیں۔ '

دوسری جانب اسرائیلی فوج نے اپنی ایک تحقیقاتی رپورٹ میں خود کو اس واقعہ سے بری قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ فوج نے بہت تھوڑی فائرنگ کی تھی۔ جبکہ اکثریت بھگدڑ کی وجہ سے ہلاک ہوئی۔

واضح رہے جمعرات کے روز پیش آنے والے اس انتہائی افسوسناک واقعہ پر متعدد یورپی رہنماؤں نے جمعہ کے روز اظہار مذمت کیا تھا۔ جبکہ یورپی کمیشن کی سربراہ ارسلا وان ڈیر لیین نے مطالبہ کیا ہے 'اس واقعہ کی شفاف تحقیقات کرائی جائیں۔' انھوں نے کہا 'وہ اس سانحہ کے بارے میں غزہ سے موصول ہونے والی تصاویر پر بہت پریشان ہیں۔ اس لیے اس واقعہ کی تحقیقات کے لیے ہر کوشش ہونی چاہیے اور اس کا خیال رکھا جائے کہ یہ تحقیقات یقینی طور پر شفاف انداز میں ہوں۔'

یورپی کونسل کے صدر چارلس مائیکل نے 'انسانی بنیادوں پر مدد حاصل کرنے والے 100 فلسطینیوں کے ہلاکت کی مذمت کی ہے۔ انہوں نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم 'ایکس' کے ذریعے مطالبہ کیا ہے کہ اس واقعہ کی فوری طور پر تحقیقات ہونی چاہیں۔

چارلس مائیکل نے کہا 'بین الاقوامی قانون دوہرے معیار کی اجازات نہیں دیتا۔ اس لیے فوری طور پر غیر جانبدارانہ تحقیقات شروع کی جائیں اور ذمہ داروں کو جوابدہ ٹھہرایا جائے۔' انہوں نے اس موقع پر فوری طور پر جنگ بندی کا بھی مطالبہ کیا اور اقوام متحدہ کے ادارے 'اونروا' سے مطالبہ کیا کہ ' شہریوں کی مدد کے لیے جلد سے جلد اقدامات کرے۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں