دمشق میں اسرائیلی میزائل حملے میں ایرانی سفارتخانے سے متصل عمارت تباہ، آٹھ ہلاک

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا نے کہا ہے کہ ’اسرائیلی حملے میں دمشق کے مضافاتی علاقے المزة میں ایرانی قونصل خانے کی عمارت کو نشانہ بنایا گیا۔‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل کے میزائل حملے میں شام کے دارالحکومت دمشق میں واقع ایرانی سفارتخانے سے متصل عمارت ملبے کا ڈھیر بن گئی ہے جس میں آٹھ افراد مارے گئے ہیں۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق پیر کو شام کے سرکاری میڈیا نے اسرائیلی میزائل حملے کی خبر دی جبکہ سیریئن وار مانیٹر گروپ نے کہا ہے کہ چھ افراد کی ہلاکت ہوئی ہے۔

مرنے والوں میں پاسداران انقلاب کی لبنان اور شام میں القدس فورس کے سربراہ محمد رضا زاھدی بھی شامل تھے۔

دمشق میں المزة کالونی ایک گنجان آباد علاقہ ہے جہاں ایرانی سفارت خانے سے متصل عمارت میزائل کا نشانہ بننے کے بعد ملبے کے ڈھیر میں تبدیل ہو گئی۔

ایرانی ذرائع ابلاغ نے یہ بھی بتایا ہے کہ دمشق میں ہونے والے حملوں میں ملحقہ عمارت مکمل طور پر تباہ ہو گئی ہے تاہم سفیر کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔

ایران کی خبر رساں ایجنسی نور نے کہا ہے کہ دمشق میں ایران کے سفیر حسین اکبری اور ان کے اہل خانہ کو اسرائیلی حملے میں کوئی نقصان نہیں پہنچا۔

جائے وقوعہ پر موجود اے ایف پی کے دو رپورٹروں نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ سفارت خانے سے متصل عمارت حملے میں زمین بوس ہو گئی۔

برطانیہ میں قائم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے کہا ہے کہ ’اسرائیلی میزائلوں نے دمشق میں ایرانی سفارت خانے سے جڑی عمارت کو تباہ کر دیا۔ آٹھ افراد جان سے گئے۔‘

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا نے اس سے قبل خبر دی تھی کہ ’ہمارے فضائی دفاعی نظام نے دمشق کے مضافات میں دشمن کے حملے کا مقابلہ کیا۔‘

یہ واقعہ آبزرویٹری کی رپورٹ کے چند روز بعد پیش آیا ہے جس میں شام میں اسرائیلی حملوں میں 53 افراد جان سے گئے جن میں 38 فوجی اور ایران کی حمایت یافتہ حزب اللہ کے سات ارکان شامل تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں