پاکستان سینیٹ: ارکان اسمبلی کی نا اہلی کی مدت پانچ کرنے سمیت چار بل منظور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سینیٹ میں جمعہ کو ارکان اسمبلی کی کسی بھی جرم میں نا اہلی کی پانچ سالہ مدت سمیت چیئرمین ، ڈپٹی چیئرمین اور ارکان سینیٹ کی تنخواہوں اور مراعات سے متعلق چار الگ الگ بل منظور کیے۔

ایوان نے وفاقی بجٹ 2023-24ء پر بحث کو موخر کرتے ہوئے قانون سازی کے سلسلے میں اضافی ایجنڈا لیا ۔ اجلاس چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی صدارت میں ہوا۔

بل کے تحت پارلیمنٹیرین کی کسی بھی جرم میں نا اہلی کی مدت پانچ سال ہو گی ۔ پاکستان تحریک انصاف اور جماعت اسلامی کے ارکان نے انتخابی ایکٹ میں ترمیم کو مخصوص شخصیت کو فائدہ پہنچانے کا بل قرار دے کر مسترد کر دیا اور واضح کیا ہے کہ کسی کے انفرادی مفاد کے لیے قانون سازی کا کوئی جواز نہیں ہے پارلیمنٹ کو اس سے گریز کرنا چاہیے ۔

اسی طرح صدر کی بجائے الیکشن کمیشن آف پاکستان کو عام انتخابات کی تاریخ کے اعلان کا اختیار حاصل ہو گا۔چیئرمین سینیٹ نے بل کی شق وار منظوری حاصل کی اور بل کو کثرت رائے سے منظور کر لیا گیا۔

اس کے علاوہ سینیٹ نے الیکشن ایکٹ میں ترمیم کا بل کثرت رائے سے منظور کرلیا، انتخابات کی تاریخ دینے کا اختیار الیکشن کمیشن آف پاکستان کو مل گیا۔ترمیم کے تحت الیکشن کمیشن اب الیکشن پروگرام میں ترمیم کر سکے گا اور نیا الیکشن شیڈول یا نئی الیکشن تاریخ کا اعلان کرسکے گا۔

سینیٹ نے ایوان کے رکن کہدہ بابر کی جانب سے پیش کئے گئے چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ اور اراکین کی تنخواہ اور مراعات سے متعلق بلز بھی منظور کرلیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں