سندھ میں ہیٹ ویو سے بچاؤ کی خاطر شہریوں کیلئے خصوصی انتظامات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے مطابق سندھ میں شدید گرمی کی لہر کے پیش نظر 1,000 سے زائد کیمپ قائم کیے گئے ہیں۔

کراچی سے خیبر تک موسم انتہائی گرم ہوتا جا رہا ہے۔ گرمی کے ساتھ بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ کی وجہ سے عوام دہری اذیت میں مبتلا ہیں۔

صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (پی ڈی ایم اے) کے حکام نے بتایا کہ سندھ میں شدید گرمی کی لہر کے پیش نظر 1,000 سے زائد کیمپ قائم کیے گئے ہیں۔

پی ڈی ایم اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر اجے کمار نے اے ایف پی کو بتایا تھا کہ یہ کیمپ متاثرہ لوگوں کو ریلیف فراہم کرنے، اور ہیٹ اسٹروک اور گرمی سے متعلق دیگر بیماریوں اور واقعات کم کرنے میں مدد کے لیے قائم کیے گئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا تھا کہ کیمپس میں آرام کرنے کی جگہ، پانی اور لوگوں کو ضروریات کے مطابق فراہم کرنے کیلئے گلوکوز بھی موجود ہے۔ خدشہ ہے کہ ہیٹ ویو اگلے ہفتے کے دوران ملک کے بیشتر حصوں کو متاثر کرے گی۔

دوسری جانب اندرون سندھ میں موسم شدید گرم اور ہیٹ ویو جاری ہے جس کے باعث مختلف علاقوں میں درجہ حرارت میں نمایاں اضافہ ہوا ہے، گزشتہ روز سب سے زیادہ درجہ حرارت موہن جوداڑو میں 48.5 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔

گذشتہ روز لاہور میں درجہ حرارت 45 اور پشاور میں 39 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ کراچی میں درجہ حرارت 35 ڈگری رہا تاہم گرمی کی شدت زیادہ محسوس کی گئی۔

ڈی جی موسمیات کا کہنا ہےکہ سندھ اور پنجاب میں درجہ حرارت مزید بڑھنے کا خدشہ ہے، کچھ علاقوں میں درجہ حرارت 50 ڈگری کو چھو سکتا ہے، شدید گرمی کے بعد اس مرتبہ مون سون کے دوران اچھی بارشوں کی بھی توقع ہے۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہےکہ ملک کے بیشتر میدانی علاقے شدید گرمی کی لہر کے زیر اثر رہیں گے،اسلام آباد اور گرد و نواح میں بھی موسم شدید گرم اور خشک رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں