.

حرم مکی میں لاکھوں نمازیوں کے با رعب مناظر کی وڈیو، حقیقت کیا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

گذشتہ چند روز کے دوران میں سوشل میڈیا پر گردش میں آنے والی ایک وڈیو کو ہزاروں بار دیکھا گیا اور اس پر سیکڑوں تبصرے سامنے آئے۔ اس وڈیو کو "حالیہ رمضان" میں مسجد حرام میں قیام اللیل یا نماز تراویح کا موقع بتایا گیا ہے جس میں لاکھوں افراد شریک ہیں۔

وڈیو کے فضائی مناظر میں حرم مکی کے بیرونی صحنوں میں ہزاروں نمازیوں کی صفیں نظر آ رہی ہیں۔ دیکھنے والوں نے ان مناظر کو "ہیبت اور رعب کا حامل" قرار دیا ہے۔ یہ مناظر کئی برسوں سے رمضان مبارک میں دیکھنے میں آتے ہیں۔

البتہ بعد ازاں یہ بات سامنے آئی کہ مذکورہ وڈیو میں دکھائی دینے والے مناظر پرانے ہیں اور رواں سال رمضان سے ان کا کوئی تعلق نہیں۔

انٹرنیٹ پر تحقیق سے یہ معلوم ہوا کہ مذکورہ وڈیو کلپ ٹویٹر پر یاسر بخش نامی اکاؤنٹ پر دو جون 2019ء کو پوسٹ کی جا چکی ہے۔ تاہم اب اس وڈیو کو پھیلانے والوں نے ایڈٹ کر کے اس کی یہ پرانی تاریخ نکال دی تا کہ وڈیو کے نئے ہونے کا تاثر دیا جا سکے۔

واضح رہے کہ یاسر بخش اپنا تعارف ایک پیشہ ور سعودی فوٹوگرافر کے طور پر کراتے ہیں۔ وہ حرم مکی کے فضائی مناظر کی عکس بندی کے حوالے سے تصاویر اور وڈیوز کے سبب جانے جاتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں