تعجب خیز.. مکھن امراض قلب کا خطرہ نہیں !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایک نئی سائنسی تحقیق میں یہ دلچسپ اور حیران کن انکشاف ہوا ہے کہ مکھن کھانا خطرناک نہیں ہے (جیسا کہ عام طور پر مشہور ہے) اور یہ امراض قلب کے خطرے میں اضافے کا سبب نہیں بنتا۔

برطانوی اخبار "ڈیلی میل" میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق محققین کے سامنے یہ بات آئی ہے کہ روزانہ ایک چمچ مکھن کھانے کا امراض قلب ، خون کی شریانوں کی بیماریوں اور فالج میں مبتلا ہونے کے ساتھ کوئی تعلق نہیں۔ اس کے علاوہ ذیابیطس میں مبتلا ہونے کے خطرے پر یہ کسی حد تک روک لگا سکتا ہے۔

طبی تحقیق کے نتائج کی تصدیق کے لیے بوسٹن میں TUFTS یونی ورسٹی کے سائنس دانوں نے 2005 سے 15 ممالک میں ہونے والی نو تحقیقوں کا جائزہ لیا جن میں امریکا ، برطانیہ اور یورپ شامل ہیں۔ نتائج میں 6 لاکھ 40 ہزار کے قریب افراد کی معلومات کو بنیاد بنایا گیا ، ان افراد کی اوسط عمر 44 سے 71 برس کے درمیان تھی۔

نتائج کے جائزے کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ روزانہ مکھن کی 14 گرام مقدار یا تقریبا 1 چمچے کا موت کے خطرے میں صرف 1% اضافے کے ساتھ تعلق ہے۔

نتائج سے یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ روزانہ کی بنیاد پر ایک چمچہ مکھن کھانے سے ٹائپ ٹو نوعیت کی ذیابیطس کے خطرے میں 4% تک کمی ہوسکتی ہے۔

ادھر تحقیق تیار کرنے والے ڈاکٹر Dariush Mozaffarian نے باور کرایا ہے کہ تحقیق کے نتائج اس جانب اشارہ کرتے ہیں کہ اس امر کی شدید ضرورت ہے کہ صحت پر منفی اثرات کے دعوے کے ساتھ لوگوں کو مکھن کھانے سے نہ ڈرایا جائے۔

مکھن کھانے میں زیادتی کا شکار افراد کے حوالے سے برطانیہ کے طبی فورم کی ایک محققہ ڈاکٹر لورا بیمبن نے باور کرایا کہ مکھن شکر کے مقابلے میں زیادہ صحت بخش آپشن ہے تاہم وہ مارجرین اور صحت بخش روغنیات سے بھرپور کھانا پکانے کے تیلوں کے مقابلے میں خراب آپشن ہی رہے گا۔

طبی تحقیق پر تبصرہ کرتے ہوئے امراض قلب کے پروفیسر ڈاکٹر عاصم ملہوترہ نے کہا کہ اعلی درجے کی اس تحقیق سے واضح طور پر ثابت ہوگیا ہے کہ مکھن کھانے سے متعلق کئی دہائیوں سے جاری اندیشہ مجموعی طور پر ایک غلطی تھی۔

دل کی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے غذائی ماہرین بحیرہ روم کے طرز کے غذائی نظام کو اپنانے کی ہدایت دیتے ہیں جو پھلوں ، سبزیوں اور دالوں سے بھرپور ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں