.

تیونسی فٹ بالر کا علیل والدہ کو گردہ عطیہ کرنے پر اصرار : ویڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ماں اور بیٹے کی آپسی محبت اور ایک دوسرے پر نچھاور ہونے کی لازوال داستانیں آئے دن انسانی معاشروں میں رقم ہوتی رہتی ہیں۔اب کہ ایک تیونسی نوجوان فٹ بالر نے اپنی علیل والدہ سے اپنی محبت کا منفرد انداز میں اظہار کیا ہے اور انھیں اپنا گردہ عطیہ کرنے کی بالاصرار پیش کش کی ہے۔

اکیس سالہ علی برنی اپنی والدہ کے ساتھ ایک ٹیلی ویژن شو میں نمودار ہوئے ہیں اور انھوں نے اپنی علیل والدہ کو مسلسل اس بات پر قائل کرنے کی کوشش کی کہ وہ بیٹے کے گردے کا عطیہ قبول کر لیں۔ اس منظر کو دیکھ کر بہت سے تیونسیوں کے دل پسیج گئے ہیں۔

فٹ بالر علی اور ان کی والدہ تیونس کے ایک مقبول ٹی وی شو ’’ مجھے کچھ کہنا ہے‘‘ میں نمودار ہوئے تھے۔ اس میں علی نے تمام ٹیلی ویژن ناظرین کے روبرو اپنی والدہ سے التجا کی کہ وہ ان کا گردہ لے لیں کیونکہ وہ انھیں تکلیف میں نہیں دیکھ سکتا۔

علی کی والدہ محض یہ سوچ کر اس ٹیلی ویژن شو میں آئی تھیں کہ وہ اپنے ایک اور بیٹے کو ٹی وی سکرین پر دیکھ سکیں گی اور اس سے گفتگو کرسکیں گی۔ان کا یہ بیٹا چھے سال قبل لاپتا ہو گیا تھا اور اب اس کے بارے میں پتا چلا ہے کہ وہ زندہ ہے اور اٹلی میں ہے۔

انھوں نے بار بار اپنے بیٹے کی گردہ عطیہ کرنے کی پیش کش کو قبول کرنے سے انکار کیا۔انھیں یہ خدشہ لاحق ہوگیا تھا کہ اس طرح ان کے بیٹے کا فٹ بال کے کھلاڑی کی حیثیت سے کیرئیر ختم ہو کر رہ جائے گا۔اس کے علاوہ انھیں اس کے لیے رشتہ ڈھونڈنے میں بھی مشکل درپیش ہو سکتی ہے اور مستقبل میں ایک باپ کی حیثیت سے بھی اس کو مشکلات کا سامنا ہوسکتا ہے۔

علی اس ٹی وی شو کے دوران بہت زیادہ جذباتی ہوگیا تھا۔ وہ مسلسل پینتالیس منٹ تک یہ اصرار کرتا رہا تھا کہ اس کی ماں اس کی پیش کش کو قبول کر لیں۔بالآخر والدہ نے پروگرام کے آخر میں بیٹے کی یہ پیش کش قبول کر ہی لی۔اس پر سوشل میڈیا پر بہت سے تبصرے کیے گئے ہیں۔