ذیابیطس کے مریضوں کیلئے چیا سیڈز کے متعدد فائدے، زیادتی سے بچنا ہوگا

یہ بیج اومیگا 3 فیٹی ایسڈز، فائبر، میگنیشیم اور آئرن کا بہترین ذریعہ ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ڈاکٹرز اور غذائیت کے ماہرین مشورہ دیتے ہیں کہ چیا سیڈز جنہیں اردو میں تخم شربتی بھی کہا جاتا ہے کو اپنی غذا میں باقاعدگی سے شامل کریں۔ کیونکہ ان کے جسم کی صحت پر بہت سے بہتر اثرات مرتب ہوتے ہیں خاص طور پر ذیابیطس کے مریضوں کیلئے اس میں بے شمار فوائد ہیں۔

ویب ایم ڈی کے مطابق چیا کے بیج اومیگا 3 فیٹی ایسڈ، فائبر، میگنیشیم اور آئرن کا ایک بڑا ذریعہ ہیں۔

یہ تمام غذائی اجزاء ٹائپ 2 ذیابیطس کی پیچیدگیاں پیدا ہونے کے خطرے کو کم کرنے میں مدد کر سکتے ہیں۔

اچھی طرح سے متوازن غذا کے ساتھ چیا کے بیجوں کو باقاعدگی سے کھانے سے وزن کم کرنے میں بھی مدد مل سکتی ہے۔ سب جانتے ہیں کہ وزن کم کرنا ذیابیطس پر قابو پانے میں بھی بہت مدد گار ہے۔ چیا سیڈز اپنی فطرت میں سوزش کے خلاف ہیں۔ لہذا یہ خون میں اضافی گلوکوز کی مقدار کو کنٹرول کرنے میں مدد کرتے ہیں۔

تخم شربتی میں فائبر ہوتا ہے۔ ذیابیطس کے مریض کیلئے روزانہ دو کھانے کے چمچ یا 20 گرام چیا سیڈز چپانے کی تجویز دی جاتی ہے۔

ڈاکٹروں کا مشورہ ہے کہ ایک چمچ چیا کے بیج کو پانی کی بوتل میں بھگو کر اس میں لیموں کے پتلے ٹکڑے ڈالیں اور ایک گھنٹے بعد پی لیں۔

ذیابیطس کی خوراک میں چیا سیڈز کو شامل کرنے کا دوسرا طریقہ سبزیوں اور پھلوں کے سلاد کے ساتھ ہے۔ چیا سیڈز کو شامل کرنے سے سلاد فائبر سے بھرپور ہو جائے گا اور بلڈ شوگر کی سطح کو مستحکم رکھنے میں بھی مدد ملے گی۔

اگرچہ چیا سیڈز کے ذیابیطس مریضوں کے لئے متعدد فوائد ہیں تاہم چیا سیڈز کا بہت زیادہ استعمال مسائل کا باعث بن سکتا ہے ۔ اس کے کچھ ضمنی اثرات، جن میں ذیابیطس، ہائی بلڈ پریشر، الرجی، یا ہاضمے کے مسائل شامل ہیں، پیدا ہوسکتے ہیں۔

لہذا خبردار رہیے کہ تجویز کردہ مقدار سے زیادہ تخم شربتی کا استعمال سائیڈ افیکٹس کا باعث بھی بن سکتا ہے۔ خون میں گلوکوز کی سطح حد سے زیادہ کم ہوسکتی ہے۔

اس لئے خوراک میں چیا سیڈز کو شامل کرنا ہے یا نہیں اور اگر شامل کرنا ہے تو اس کی مقدار کیا ہو ۔ اس حوالے سے ڈاکٹر سے رجوع کرنا ہی سب سے بہتر ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں