دبئی میں سیاحوں کی آمد مہمان نوازی کے شعبے میں ترقی کی مثبت رفتار طے کرتی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

انڈیا ، روس اور عمان سے سیاحوں کی مسلسل آمد سے یو اے ای کے مہمان نوازی کے شعبے میں 2023 کی پہلی سہ ماہی میں مضبوط ترقی کی رفتار کا مشاہدہ کیا گیا ہے،۔ اس بات کا انکشاف تازہ ترین جے ایل ایل یو اے ای رئیل اسٹیٹ مارکیٹ جائزہ رپورٹ میں کیا گیا۔

دبئی نے 2023 کے پہلے دو مہینوں میں تقریباً 3.1 ملین سیاحوں کا خیرمقدم کیا، جو گزشتہ سال کی اسی مدت کے مقابلے میں 42 فیصد اضافہ ہے۔
اندرون ملک سیاحت میں اضافے نے نچلے اور درمیانی درجے کے مہمان نوازی کے طبقوں کو بھی فائدہ پہنچایا۔ مزید برآں، دبئی اور ابوظہبی میں گلف فوڈ اور آئیڈکس جیسے ایونٹس کی میزبانی شعبے میں شاندار کارکردگی پیش کرنے میں مزید مدد فراہم کرتی ہے۔

فراز احمد، ایسوسی ایٹ، ریسرچ جے ایل ایل مینا ریجن نے کہا کہ " سیاحت متحدہ عرب امارات کی معاشی تیزی میں کردار ادا کرنے والے اہم ستونوں میں سے ہے۔

تاہم، میکرو اکنامک اتار چڑھاؤ عالمی سفری رجحانات پر اثرانداز ہوتے رہتے ہیں، جس سے آپریٹرز کے لیے ٹاپ لائن ریونیو کو بڑھانے کے لیے ریونیو مینجمنٹ کی مؤثر حکمت عملیوں کو استعمال کرنا اہم ہو جاتا ہے، خاص طور پر وہ لوگ جو لگژری سیگمنٹ میں ہیں۔

2,000 کے اضافے کے ساتھ دبئی کا ہوٹل اسٹاک 150,000 تک آ گیا ہے۔ مزید برآں، بڑھتی ہوئی مانگ کی وجہ سے، سال میں تقریباً 8,000 مزید چابیاں فراہم کیے جانے کی توقع ہے۔

اس کے مقابلے میں، ابوظہبی کے ہوٹل کی سپلائی محدود تھی، موجودہ انوینٹری میں تقریباً 200 چابیاں شامل کی گئیں، جس سے کل اسٹاک 32,500 تک پہنچ گیا۔

ریٹیل سیکٹر مستحکم ہے

ریٹیل سیکٹر کے شعبہ میں، دبئی میں کمیونٹی ریٹیل ڈیولپمنٹس کی شکل میں تقریباً 34,000 مربع میٹر جگہ کا اضافہ کیا گیا، جس سے پہلی سہ ماہی میں کل اسٹاک تقریباً 4.7 ملین مربع میٹر تک بڑھا دیا گیا۔
اسی عرصے کے دوران، ابوظہبی نے مجموعی طور پر 212,000 مربع میٹر کی سپر ریجنل اور کمیونٹی ریٹیل ڈیولپمنٹ کی فراہمی دیکھی۔ ریٹیل جی ایل اے (گراس لیز ایبل ایریا) جس نے بعد میں دارالحکومت کے کل اسٹاک کو 3.11 ملین مربع میٹر تک پہنچا دیا۔

آنے والے مہینوں میں، تقریباً 213,000 مربع میٹر ریٹیل اسپیس کی فراہمی دونوں امارات میں مشترکہ طور پر کی جائے گی، جن میں سے تقریباً 194,000 مربع میٹر دبئی اور 19,000 مربع میٹر ابو ظہبی کے لیے متوقع ہے۔

دبئی میں، واقع پرائمری مالز نے کیو ون 2023 میں مجموعی مارکیٹ سے بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کیا، اوسط کرایوں میں سال بہ سال 1 فیصد اضافہ ہوا، جبکہ شہر بھر میں پرائمری اور سیکنڈری مالز کے اوسط کرایوں میں سالانہ 1 فیصد کمی واقع ہوئی۔

اس سیکٹر کے اندر ہونے والی کچھ اہم پیش رفتوں میں مالک مکان اور کرایہ داروں کے ساتھ لیز کی شرائط کو سخت کرنا، ریونیو شیئر کے پچھلے ماڈلز سے ہٹنا، اور انتہائی غیر معمولی معاملات میں بہت کم سرمایہ کے اخراجات کی مدد کی پیشکش کرنا شامل ہیں۔

ابوظہبی میں اوسط کرائے 2023 کے پہلے تین مہینوں میں سالانہ شرائط میں مستحکم رہے۔ دبئی کے مقابلے میں، دارالحکومت میں مالک مکان نے لچک کا مظاہرہ کرتے ہوئے کرایہ داروں کو راغب کرنے کے لیے مراعات کی پیشکش کی۔

رہائشی فروخت میں آف پلان لین دین

رہائشی شعبے میں، دبئی میں 2022 کی تیسری سہ ماہی میں آف پلان سیلز کی بحالی شروع ہوئی۔ یہ رجحان مسلسل تیسری سہ ماہی تک جاری رہا۔

آف پلان لین دین نے قیمت اور حجم کے لحاظ سے موجودہ پراپرٹیز کو پیچھے چھوڑ دیا، جو کل مالیت کا 56 فیصد اور کل حجم کا 59 فیصد ہے۔ یہ اس بات نشاندہی کرتی ہے کہ ڈویلپر اور سرمایہ کار دونوں کا اعتماد آف پلان مارکیٹ میں لوٹ آ یا ہے۔

اسی طرح ابوظہبی میں بھی آف پلان لین دین کا رجحان پچھلے سال کی دوسری ششماہی سے عام ہے۔کوانٹا کے اعداد و شمار کے مطابق، آف پلان پراپرٹی ٹرانزیکشنز کل رہائشی فروخت کی مالیت کا تقریباً 74 فیصد ہیں۔

نئے جزیروں پر پیش کی جانے والی ترقیاتی پیشرفتوں کے باعث رہائشی جزیروں پہ منتقل ہونے کو ترجیح دے رہے ہیں ، اس سے مرکزی جزیرے پر پرانے منصوبوں کی قیمتوں پر دباؤ بڑھتا جا رہا ہے۔ نتیجتا، شہر بھر میں قیمت فروخت اور کرایوں میں میں 1 فیصد کا معمولی اضافہ ہوا۔

سالانہ شرائط میں دیکھا جائے تو فروری 2023 میں دبئی میں کرایوں میں 28 فیصد اضافہ ہوا۔

بڑے یونٹس، خاص طور پر ولاوں کی بڑھتی مانگ کے باعث، کرائے میں اضافہ جاری ہے۔

دبئی میں رہائشی سپلائیز میں پہلی سہ ماہی میں 9,800 یونٹس کا اضافہ ہوا، جس سے کل سٹاک 690,000 یونٹس ہو گیا۔ اگلے سال میں اضافی 32,000 یونٹس فراہم کیے جانے کی توقع ہے۔ دارالحکومت ابو ظہبی میں، تقریباً 1,800 یونٹس کا اضافہ کیا گیا، جس سے کل رہائشی اسٹاک 281,000 یونٹس تک پہنچ گیا۔ آئندہ سپلائی کے لحاظ سے، ابوظہبی کے پاس 2023 کے لیے پائپ لائن میں اضافی 4,000 یونٹس ہیں۔

گریڈ اے دفتری جگہوں کے لیے ترجیح میں اضافہ
ملازمین کو متحدہ عرب امارات میں دفتر میں واپس آنے کی ترغیب دینے کے ساتھ ساتھ بہترین ٹیلنٹ کو راغب کرنے کے اقدام میں، کارپوریٹس تیزی سے اپنے رئیل اسٹیٹ کے اثاثوں کو اپ گریڈ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں جس کے بعد پائیداری اور تندرستی پر توجہ دی جائے گی۔

اس کے علاوہ، 2023 کی پہلی سہ ماہی میں نئے مارکیٹ میں داخل ہونے والوں سے پوچھ گچھ میں نمایاں اضافہ اور لچکدار دفاتر کی مضبوط مانگ بھی ریکارڈ کی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں