.

شاہ محمد ششم نے ہسپانوی مجرم کی سزا معافی کا فیصلہ واپس لے لیا

یورپی شہریوں کی مراکشی بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات میں اضافہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مراکش کے شاہ محمد ششم نے ہسپانوی شہری کی سزا معاف کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا ہے۔ سپین کے ساٹھ سالہ باشندے وینا کو کم از کم گیارہ مراکشی بچوں کے ساتھ زیادتی کرنے پر دوسال قبل سزا سنائی گئی تھی، مگر بعد ازاں یہ سزا معاف کر دی گئی تھی۔ سزا کی معافی پر مراکش میں عوام کا سخت ردعمل احتجاجی مظاہروں کی صورت سامنے آیا۔ شاہ کی طرف سے سزا بحال کرنے کا فیصلہ اس عوامی احتجاج کو وسعت دینے کے اعلان کے بعد کیا گیا ہے۔

کئی روز سے جاری عوامی احجاج پرابتدائی طور پر شاہ محمد ششم نے اس معاملے کی تحقیقات کرنے کا اعلان کیا تھا کہ ہسپانوی سزا یافتہ کو معافی کیونکر دی گئی، تاہم عوامی غم وغصہ میں کمی لانے کے لیے یہ کافی ثابت نہ ہوا۔ اتوار کے روز سپین کے شہری کو عدالت سے ملنے والی سزا بحال کرنے کا اعلان کرنا پڑا۔ اس امر کا اعلان سرکاری خبر رساں ادارے ''میپ'' کی ایک خبر میں کیا گیا ہے۔

شاہی اعلان میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ وزیر انصاف اس سلسلے میں سپین کی حکومت سے بات کریں گے۔ واضح رہے کہ وینا نامی ہسپانوی شہری کو چار سال سے پندرہ سال کے گیارہ مراکشی بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے کے جرم میں سزا دی گئی تھی، وینا ان 48 ہسپانوی قیدیوں میں شامل ہے جنہیں ہسپانوی بادشاہ جوآن کارلوس کی درخواست پررہا کیا گیا ہے۔

وینا کوستمبر 2011 کو عدالت نے 30 سال قید کی سزا سنائی تھی اورگزشتہ منگل کے روز مراکشی دارالحکومت کے شمال میں واقع شہرکینیترا کی جیل سے رہا کیا گیا تھا ۔ مراکش میں بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے بڑھتے ہوئے واقعات کے خلاف حالیہ مہینوں میں اس وقت سخت عوامی غصے کا اظہار شروع ہوا تھا جب یورپی ممالک کے مختلف افراد یکے بعد دیگرے ان الزامات میں گرفتار ہونے یا سزا پانے کے کئی واقعات رپورٹ ہوئے۔

بیس جون کو اسی الزام کے تحت ایک مشکوک برطانوی شہری نے مبینہ طور پر چھ سالہ بچی کو اسی ''ضرورت'' کے تحت اغواء کیا تو اہل علاقہ نے بچی کی چیخیں سن لی تھیں ۔ بعد ازاں برطانوی شہری کو گرفتار کر لیا گیا۔ ماہ مئی میں ساٹھ سالہ فرانسیسی شہری کو کاسا بلانکا کی عدالت نے بچوں کے ساتھ زیادتی کے جرم میں 12 سال قید کی سزا سنائی تھی۔ ان مسلسل واقعت کے سامنے آنے پر مراکشی عوام میں اپنے بچوں کے حوالے سے عدم تحفظ کا احساس بڑھنے لگا ہے۔