سعودی عرب میں داعش کے 2 دہشت گرد ہلاک، 3 گرفتار

'گرفتار دہشت گرد نے والدین کو قتل کرنے کی دھمکی دی تھی'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ پولیس نے دو شہروں ریاض اور دمام میں دہشت گردوں کے خلاف ایک حالیہ آپریشن میں "داعش" کا ایک نیا نیٹ ورک پکڑا ہے جس میں شامل 02 دہشت گردوں کو ہلاک اور 03 گرفتار کر لئے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں بتایا گیا ہے کہ دارالحکومت ریاض میں الفیحاء کالونی میں پولیس نے دہشت گردوں کے ایک خفیہ ٹھکانے پر چھاپہ مارا۔ اس کے علاوہ الدمام شہر میں بھی دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر چھاپے مارے گئے۔ دہشت گردوں کے خلاف کیے گئے تازہ آپریشن میں دو شدت پسندوں کو ہلاک اور تین کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ گرفتار کیے گئے دہشت گر ابہاء کے مقام پر پولیس کی ایمرجنسی سروسز کی مسجد میں دھماکوں میں بھی ملوث ہیں۔

بیان میں بتایا گیا ہے کہ پولیس کی کارروائی میں ہلاک ہونے والے دہشت گردوں کی شناخت عبدالعزیز زید الشمری اور عقیل عمیش المطیری کے ناموں سے کی گئی ہے۔ اول الذکر دہشت گرد کو الدمام میں ہلاک کیا گیا جب کہ دوسرےکو ریاض میں مارا گیا ہے۔

دہشت گردوں کے ساتھ لڑائی کے دوران دمام سے دو اشتہاریوں مہند محمد العتیبی اور فہد فلاح الحربی جب کہ ریاض سے فیصل حامد الغامدی کو گرفتار کیا گیا ہے۔

بیان میں بتایاگیا ہے کہ دمام سے پکڑاگیا دہشت گرد عقیل المطیری سعودی پولیس کو مطلوب 85 دہشت گردوں کی فہرست میں شامل ہے۔ اسے عراق سے واپس لایا گیا تھا جہاں اسے تین سال تک جیل میں رکھا گیا۔

جیل سے نکلنے کے بعد وہ یمن چلا گیا اور چپکے سے دوبارہ سعودی عرب میں داخل ہو گیا تھا جب کہ فیصل الغامدی نے اپنے والدین کو بھی قتل کرنے دھمکی دی تھی تاہم اس کے والدین نے سیکیورٹی حکام کو اپنے دہشت گرد بیٹے کے بارے میں مخبری کر دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں