جرمنی: اسامہ بن لادن کا سابق ذاتی محافظ گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جرمنی میں پولیس کا کہنا ہے کہ اس نے ایک شدت پسند کو گرفتار کیا ہے جس کے بارے میں شبہہ ہے کہ وہ القاعدہ تنظیم کے بانی اسامہ بن لادن کا ذاتی محافظ رہ چکا ہے۔

رواں برس جرمن میڈیا میں یہ رپورٹیں آئی تھیں کہ جرمن انٹیلی جنس اداروں کی جانب سے 42 سالہ تیونسی "سامی اے" کو ممکنہ خطرہ قرار دینے کے باوجود وہ سوشل ویلفیئر کی سہولت سے فائدہ اٹھا رہا تھا۔

پولیس کے ترجمان کے مطابق بوخم شہر میں حکام نے پولیس سے مطالبہ کیا تھا کہ سامے اے کو حراست میں لیا جائے اور مذکورہ شخص نے کوئی مزاحمت نہیں کی۔

جرمن روزنامے "بیلڈ" کا کہنا ہے کہ سامے اے کو ملک سے بے دخل کر دیا جائے گا۔ پولیس کی جانب سے اس کی تصدیق نہیں ہو سکی اس لیے کہ مذکورہ معاملے کے ذمّے دار بوخم شہر کے حکام ہیں۔

جرمن وزیر داخلہ ہورسٹ زیہوفر نے امیگریشن حکام کو ہدایت کی تھی کہ سامے اے کی بے دخلی کے لیے جلد اقدامات کیے جائیں۔

بیلڈ اخبار کی ایک سابقہ رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ جرمن حکام 2006ء سے اس تیونسی باشندے کی بے دخلی کی کوشش کر رہے ہیں تاہم سامی کے اپنے ملک میں تشدد کا نشانہ بننے کا امکان اس معاملے میں رکاوٹ بنا رہا۔ سامی اے 1997ء سے جرمنی کے شمال مغربی شہر بوخم میں رہ رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں