ایران میں ہلکے اور درمیانے درجے کے تین زلزلے ، 130 افراد زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ایران کے مغربی صوبے کرمان شاہ میں 5.9 کی شدت کا زلزلہ آیا ہے جس کے نتیجے میں کم سے کم 130 افراد زخمی ہوگئے ہیں ۔اس سے چند گھنٹے کے پہلے ایران کے جنوبی صوبے ہرمزگان میں ہلکی شدت کے دو اور زلزلے آئے ہیں۔

کرمان شاہ کے گورنر ہوشنگ بازوند نے کہا ہے کہ زلزلے کے نتیجے میں زخمی ہونے والے 128 افراد میں بیشتر کو ابتدائی طبی امداد مہیا کردی گئی ہے اور انھیں اسپتال میں داخل کرنے کی ضرورت نہیں۔

ایران کے سرکاری میڈیا کے مطابق اس سے پہلے ہلکے درجے کے دو زلزلے آئے تھے۔ ریختر اسکیل پر ان کی شدت 4.7 اور 5.7 تھی ۔ان سے بعض دیہات میں عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے لیکن ان سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

ایران کی ہلال احمر کے ترجمان مرتضیٰ سلیمی نے سرکاری خبررساں ایجنسی ایرنا کو بتایا ہے کہ ان دونوں زلزلوں سے معمولی نقصان ہوا ہے اور بعض مقامات پر مکانوں کی دیواریں گرنے کی اطلاع ہے۔

اتوار کو صوبہ ہرمزگا ن میں واقع قصبے روئیدار میں پہلا زلزلہ آیا تھا،ریختر اسکیل پر اس کی شدت 4.6 تھی۔ یہ قصبہ دارالحکومت تہران سے 940 کلومیٹر جنوب میں واقع ہے۔امریکی ارضیاتی سروے کے مطابق اس کے بعد 5.4 کی شدت کا دوسرا زلزلہ آیا تھا ۔ایران کی ایک نیم سرکاری خبررساں ایجنسی نے اس سے پہلے اس کی شدت 5.7 بتائی تھی۔

دوپہر کے وقت عراق کی سرحد کے نزدیک واقع صوبہ کرمان شاہ میں 5.9 کی شدت کا تیسرا زلزلہ آیا ہے۔ان تینوں زلزلوں کی گہرائی دس کلومیٹر سے کم تھی۔اس لیے زیادہ نقصان نہیں ہوا ۔ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن نے قدرتی آفات سے نمٹنے کے لیے قائم ایجنسی کے سربراہ پیر حسین قلی وند کے حوالے سے بتایا ہے کہ ہیلی کاپٹر ز پہاڑی علاقوں کا سروے کررہے ہیں اور زلزلے کے مقام سے نزدیک واقع شہروں میں اسپتالوں اور ہنگامی مراکز کو مزید زخمیوں کو طبی امداد دینے کے لیے الرٹ کردیا گیا ہے ۔

واضح رہے کہ ایران بڑی فالٹ لائن پر واقع ہے اور یہاں تھوڑے تھوڑے وقفے سے ہلکے اور زیادہ شدت کے زلزلے آتے رہتے ہیں۔ گذشتہ سال نومبر میں ایران کے مغربی علاقے میں 7.2 کی شدت کے زلزلے میں 600 سے زیادہ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔2003ء میں 6.6 کی شدت کے زلزلے سے ایران کا تاریخی شہر بام ملیا میٹ ہوگیا تھا اور 25 ہزار سے زیادہ افراد مارے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں