مسلمانوں سے اظہار یکجہتی، نیوزی لینڈ کی وزیراعظم حجاب میں!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نیوزی لینڈ کے شہر کرائیسٹ چرچ میں جمعہ کے روز نماز جمعہ کے وقت ایک آسٹریلوی دہشت گرد کےدو مساجد پراندھا دھند فائرنگ اور 50 نمازیوں کی شہادت کے بعد ملک کی وزیراعظم نے مسلمانوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ‌کے مطابق نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا ارڈرن نے کرائیسٹ چرچ میں ایک پناہ گزین کیمپ کا دورہ کیا۔ اپنے اس دورے کے دوران انہوں نے غیر روایتی طور پر سرپرایک بڑی چادر اوڑھ رکھی تھی۔ بعض لوگوں‌نے اس پرمثبت رد عمل کا اظہارکیا ہے جب کہ بعض نے تنقید سے بچنے کے لیے'فوٹو سیشن' کی کوشش قرار دیا ہے۔

اس موقع پر انہوں نے کہا مساجد پر حملہ طے شدہ منصوبہ اور دہشت گردی کی انتہائی خطرناک سازش تھی۔

ان کا کہنا تھاکہ ان کا ملک تاریخ کے انتہائی مشکل دور سے گذر رہا ہے۔ مجرم انتہا پسندانہ نظریات رکھتے ہیں مگر ان کے لیے نیوزی لینڈ اور دنیا میں کہیں بھی کوئی جائے پناہ نہیں ہوگی۔

نیوزی لینڈ میں جمعہ کے روز ایک آسٹریلوی دہشت گرد کے حملے میں 50 بے گناہ نمازیوں‌کی شہادت کے واقعے نے پورےملک کو صدمے سےدوچار کیا ہے۔ شہید ہونے والے زیادہ تر مسلمانوں کا تعلق پاکستان، ملائیشیا، انڈونیشیا، صومالیہ، افغانستان، سعودی عرب، فلسطین، عراق اور اردن سے ہے۔ مساجد میں دہشت گردی کے واقعے کے بعد نیوزی لینڈ کی تمام مساجد بند ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں