.

یمن: تعز پر حوثیوں کی وحشیانہ گولہ باری سے دو ننھے بچے جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے شہر تعز کے مشرق میں حوثی ملیشیا کی گولہ باری کے نتیجے میں ایک ہی خاندان کے دو بچے جاں بحق اور تیسرا زخمی ہو گیا۔

انسانی حقوق کے ایک ذریعے نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ حوثی باغیوں نے جمعے کے روز تعز شہر کے مشرق میں واقع ضلع صالہ میں رہائشی علاقوں کو مارٹر گولوں سے نشانہ بنایا۔

ان میں ایک گولا حبیل شویع کے علاقے میں ایک گھر کے نزدیک گرا۔ اس کے نتیجے میں دو بہن بھائی 3 سالہ تمیم اور 4 سالہ سما موت کی نیند سو گئے۔

حوثی ملیشیا کی جانب سے تعز شہر کے رہائشی علاقوں پر گولہ باری کا سلسلہ جاری ہے۔ یہ گولہ باری شہریوں کے جانی نقصان کا سبب بن رہی ہے۔ البتہ اس اندھیر نگری پر مقامی اوربین الاقوامی تنظیموں نے چُپ سادھی ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ حوثیوں کی جانب سے توپوں کی گولہ باری اور راکٹوں کے حملوں نے تعز میں سیکڑوں شہریوں کی جانیں لے لی ہیں۔ ان میں اکثریت بچوں اور عورتوں کی ہے۔ تعز شہر چار سال سے حوثیوں کے محاصرے میں ہے۔