.

امریکی فوجی تربیتی مراکز میں زیر تعلیم سعودی کیڈٹس کو کوئی خطرہ نہیں: پینٹاگان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزارت دفاع (پینٹاگان) نے جمعرات کے روز جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ امریکا میں اس وقت زیر تعلیم تقریبا 850 سعودی کیڈٹس کا جائزہ لینے پر اسے کسی خطرے سے متعلق معلومات نہیں ملیں۔ یہ جائزہ رواں ماہ فلوریڈا میں ایک فوجی اڈے پر سعودی تربیتی فوجی اہل کار کے ہاتھوں تین افراد کی ہلاکت کے بعد عمل میں آیا۔

دفاعی انٹیلی جنس اور قانون اور امن کے نفاذ کے ڈائریکٹر جیری ریڈ نے ایک پریس بریفنگ میں بتایا کہ "ہم یہ کہنے کی گنجائش رکھتے ہیں کہ ایسی کوئی معلومات نہیں پائی جاتیں جو کسی بھی جلد خطرے کے بارے میں انکشاف کریں"۔

اس جائزے کا نتیجہ امریکی عسکری اتھارٹیز کو اس بات کا موقع دے گا کہ وہ عملی تربیت پر عائد اُس پابندی کو اٹھا لے جس کے تحت سعودی عسکری ہوابازوں کو اڑان سے روک دیا گیا تھا۔ اب یہ ہواباز نارمل طریقے سے اپنی تعلیمی سرگرمیوں کی جانب لوٹ سکیں گے۔

امریکی ایف بی آئی یہ کہہ چکا ہے امریکی تحقیق کاروں کے نزدیک چھ دسمبر کو فلوریڈا میں امریکی بحریہ کے اڈے پینساکولا پر 21 سالہ سعودی کیڈٹ محمد سعید الشمرانی کا حملہ اُس کا ذاتی عمل تھا۔ حملے کے بعد وہ امریکی پولیس کے ایک افسر کی ہاتھوں موت کی نیند سلا دیا گیا۔