.

چین : اسکولوں میں سماجی فاصلے کو یقینی بنانے کے لیے طلبہ کی 1 میٹر لمبی ٹوپیاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایسے وقت میں جب کہ دنیا بھر میں کمپنیاں کرونا وائرس کے خلاف ویکسین ایجاد کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں ،،، بعض ممالک سماجی فاصلے کو یقینی بنانے کے لیے نت نئے طریقے سامنے لا رہے ہیں۔ کوویڈ 19 وائرس کے مؤثر علاج کی عدم دستیابی میں سماجی دوری مثالی حل ہے۔ اس سلسلے میں چین کے اسکولوں نے ایسی ٹوپیوں کا سہارا لینا شروع کر دیا ہے جو طلبہ کے درمیان محفوظ فاصلے کو برقرار رکھنے میں اپنا کردار ادا کر رہی ہیں۔ یہ پیش رفت کرونا کے سبب ملک کے اسکولوں کی تین ماہ کے لیے بندش کے بعد سامنے آئی ہے۔

چین کے مشرقی صوبے زیجیانگ کے شہر ہینگزو میں ایک پرائمری اسکول کی کلاس کے اندر بنایا گیا وڈیو کلپ وائرل ہو رہا ہے۔ وڈیو میں چھوٹے طلبہ ایسی ٹوپیاں پہنے دکھائی دے رہے ہیں جن میں جانبی پٹیاں فراہم کی گئی ہیں۔ یہ پٹیاں ایک میٹر لمبی ہیں اور ان کا مقصد ایک دوسرے سے دور رہنے کی ضرورت کے حوالے سے متنبہ کرنا ہے۔ علاوہ ازیں یہ بچے چہروں پر طبی ماسک بھی پہنتے ہیں۔

برطانوی اخبار "ڈیلی میل" کے مطابق مذکورہ اسکول نے ان ٹوپیوں کی تجویز ایسے موقع پر پیش کی جب 26 اپریل سے پہلی سے تیسری جماعت کے چھوٹے طلبہ کے دوبارہ اسکول آنے کا آغاز ہوا۔

اسکول کے پرنسپل نے ایک اخباری بیان میں کہا کہ "ہم طلبہ کے ایک میٹر طویل ٹوپی پہننے پر ان کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں ... اس کا مقصد یہ ہے کہ وہ ایک دوسرے سے 1 میٹر (3.5 فٹ) کے فاصلے پر رہیں"۔

چین میں حکام نے تین ماہ کی بندش کے بعد بعض اسکولوں کو دوبارہ کھولنے کی اجازت دے دی ہے۔