.

فرانسیسی صدر کی ذہنی صحت پر تبصرہ ترک صدر کو مہنگا پڑ گیا

پیرس نے ریمارکس ناقابل قبول قرار دے کر انقرہ سے سفیر واپس بلا لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن کی جانب سے فرانسیسی صدر عمانویل ماکروں کی ذہنی صحت سے متعلق سوال اٹھانے پر بطور احتجاج پیرس نے انقرہ سے اپنے سفیر کو مشورے کے لیے واپس بلوا لیا ہے۔ فرانس نے ترک صدر کے تبصرے کو ’’ناقابل قبول‘‘ قرار دیا ہے۔

فرانسیسی صدر کے دفتر سے منسلک ایک اہلکار نے خبر رساں ادارے ’’اے ایف پی‘‘ کو بتایا کہ صدر ایردوآن کا تبصرہ ناقابل قبول ہے۔ زیادتی اور بدتمیزی بات کرنے کا کوئی طریقہ نہیں ہے۔ ہم رجب ایردوآن سے اپنی پالیسی بدلنے کا مطالبہ کرتے ہیں کیونکہ یہ ہر لحاظ سے خطرناک ہے۔‘‘

عہدیدار نے مزید بتایا کہ ترکی میں تعینات فرانسیسی سفیر کو اس معاملے پر مشاورت کے لیے پیرس واپس بلوایا جا رہا ہے۔ وہ صدر ماکروں سے ملاقات میں اس معاملے پربات کریں گے۔

صدر ایردوآن نے اس سے قبل فرانسیسی صدر کو ان کی مسلمانوں کے حوالے سے پالیسی پر برا بھلا کہتے ہوئے عمانویل ماکروں کو اپنے ’’دماغی معائنے‘‘ کا مشورہ دیا۔