.

سعودی عرب میں ابھاہوائی اڈے اورنجران پردہشت گردحوثیوں کےڈرون حملوں کی کوشش کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) اور خلیج تعاون کونسل (جی سی سی)نے یمن سے دہشت گرد حوثی ملیشیا کے سعودی عرب کے شہرابھا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو بم سے لدے ڈرون سے نشانہ بنانے کی کوشش کی شدید مذمت کی ہے۔

اوآئی سی کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر یوسف بن احمدالعثیمین نے بدھ کوایک بیان میں تنظیم کے اس مؤقف کا اعادہ کیا ہےکہ’’مسافروں اورشہریوں کی زندگیوں کوخطرے میں ڈالنا دہشت گردی کی بزدلانہ کارروائی ہے، جنگی جرم ہے اور بین الاقوامی انسانی قوانین کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔‘‘

انھوں نے ایران کے حمایت یافتہ حوثی دہشت گردوں کی جانب سے نجران شہر میں شہریوں اورشہری تنصیبات کو بم سے لدے ڈرون سے نشانہ بنانے کی کوشش کی بھی مذمت کی۔

ڈاکٹرالعثیمین نے سعودی عرب کی سلامتی،استحکام اور شہریوں اورمکینوں کے تحفظ کے لیے دہشت گرد حوثی ملیشیا کی کارروائیوں سے نمٹنے کی غرض سے کیے جانے والے اقدامات کی حمایت کااعادہ کیا ہے۔

خلیج تعاون کونسل کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹرنایف فلاح مبارک الحجرف نے ایک الگ بیان میں دہشت گرد حوثی ملیشیا کے ابھا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے اورجنوبی شہر نجران میں سعودی شہریوں اور شہری تنصیبات کو بارود سے لدے دو ڈرونز سے نشانہ بنانے کی کوششوں کی مذمت کی ہے۔

انھوں نے دہشت گرد حوثی ملیشیا کی مسافروں اور شہریوں کی زندگیوں کو خطرے سے دوچار کرنے کوشش کی بھی مذمت کی اور ان کی دہشت گردی کی بزدلانہ کارروائی کوجنگی جرم اور بین الاقوامی انسانی قوانین کی سنگین خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

عرب اتحاد کے فضائی دفاعی نظام نے آج علی الصباح یمن سے چھوڑے گئے ان دونوں ڈرونز کو کسی ہدف تک پہنچنے سے پہلے ہی تباہ کردیا تھا اوران سے کوئی نقصان نہیں ہوا ہے۔