یمن: تعز اور مارب کے محاذوں پر سرکاری فوج کی نئی پیش قدمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یمنی فوج نے ایران نواز حوثی ملیشیا کے ساتھ پرتشدد لڑائی میں تعز اور مارب میں نئی زمینی پیش قدمی کا اعلان کیا ہے۔ اس لڑائی میں فوج کو عرب اتحاد کی مدد بھی حاصل تھی۔

یمنی فوج کی سرکاری ویب سائٹ پر بتایا گیا ہے کہ اتوار کے روز فوجی دستوں نے تعز گورنری کے متعدد محاذوں پر عرب اتحاد اور مقامی مزاحمت کاروں کی مدد سے میدانی پیش رفت کی۔ اس دوران دشمن ملیشیا کو بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھانا پڑا اور باغی کئی مقامات پر پسپا ہوگئے۔

ویب سائٹ پر پوسٹ کی گئی خبر میں بتایا گیا ہے کہ یمنی فوج نے مقبنہ اور العنین کے محاذوں پر حوثی ملیشیا کے ٹھکانوں پر حملہ کیا جس کے بعد وہ "الاحطاب" اور "الاخلود" علاقوں کو آزاد کرانے میں کامیاب ہو گئے۔

اس کے ساتھ ہی عرب اتحاد کے جنگجوؤں نے آئینی حکومت کی حمایت کرنے والے عرب اتحاد نے اسی محاذ پر ملیشیا کے اجتماعات اور کمک کو نشانہ بنایا۔

ان محاذوں پر تصادم اب بھی جاری ہے- فضائی حملوں کے نتیجے میں حوثی ملیشیا کی صفوں میں درجنوں افراد ہلاک اور زخمی ہوئے اور ان کی گاڑیوں کو نقصان پہنچا ہے۔

اس تناظر میں فوجی دستوں اور جائنٹس بریگیڈز جنہیں عرب عسکری اتحاد کی معاونت بھی حاصل رہی ہے نے اتوار کو شبوہ اور مآرب گورنریوں کے درمیان اسٹریٹجک مقامات پر دوبارہ قبضہ کر لیا۔

ایک فیلڈ ذرائع نے بتایا کہ فوجی دستوں اور جائنٹس بریگیڈز نے "مبلقہ" محاذ پر اہم پیش قدمی کی ہے اور حریب اور عبدیہ ڈاریکٹوریٹس میں متعدد مقامات کو آزاد کرا لیا ہے۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ آئینی فوج کی حمایت کرنے والے عرب اتحاد کے جنگجوؤں نے لڑائیوں میں فوج اور العمالقہ بریگیڈیز نے علاقے میں حوثی ملیشیا کی کمک پر بمباری کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں