.
حج وعمرہ

حج سے قبل ایک لاکھ 70 ہزار سے زیادہ عازمین مدینہ منورہ پہنچ چکے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی حکام کے مطابق اس سال حج سے قبل اب تک دنیا بھر سے مدینہ منورہ میں ایک لاکھ 72 ہزار 562 عازمین پہنچ چکے ہیں۔

سعودی وزارت حج وعمرہ کی جانب سے مدینہ منورہ پہنچنے اور روانہ ہونے والے عازمین حج کے اعداد و شمار سے پتاچلتا ہے کہ حج پروازوں کے آغازکے بعد سے اب تک 156,828 عازمین کی مدینہ منورہ کے شہزادہ محمد بن عبدالعزیز بین الاقوامی ہوائی اڈے پرآمد ہوچکی ہےجبکہ لینڈ امیگریشن سینٹر نے 13,097 عازمین حج کا خیرمقدم کیا ہے۔ وہ زمینی سرحدی گزرگاہوں کے ذریعے شہرنبی ﷺ پہنچے تھے۔

مدینہ میں قیام پذیرعازمین کی قومیتوں کے اعدادوشمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ انڈونیشیا کے عازمین کی تعداد سب سے زیادہ (24,478) ہے۔اس کے بعد بھارت، بنگلہ دیش، عراق اور ایران سے تعلق رکھنے والے عازمین کی مدینہ منورہ میں پہنچ چکے ہیں۔

گذشتہ چند روزکے دوران میں 76,955 عازمین مدینہ منورہ سے مکہ مکرمہ کے مقدس مقامات کی طرف روانہ ہوئے تھے۔رواں ماہ کے اوائل میں سعودی عرب نے کرونا وائرس کی وبا کے بعد غیرملکی عازمین حج کے پہلے دستے کا خیرمقدم کیا تھا۔یہ مسلم اکثریتی ملک انڈونیشیا سے تعلق رکھنے والے عازمین حج تھے۔

اس کے بعد پاکستان سمیت دوسرے اسلامی ممالک سے بھی عازمین کی مدینہ منورہ میں آمد کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا۔پاکستانی عازمین تو مدینہ منورہ میں آٹھ روزہ قیام کے بعد مکہ مکرمہ کی جانب جارہے ہیں جبکہ دوسرے ممالک کے عازمین اپنے اپنے طے شدہ شیڈول کے مطابق مکہ مکرمہ روانہ ہورہے ہیں۔

واضح رہے کہ کرونا وائرس کی وبا کے دوران میں حکام نے صحت سے متعلق عالمی رہنما خطوط کے مطابق سالانہ حج کو محدود کردیا تھا اور صرف سعودی عرب میں مقیم شہریوں اور تارکین وطن کو محدود تعداد میں حج کرنے کی اجازت دی گئی تھی۔

اسلام کے پانچ ستونوں میں سے ایک حج تمام صاحبِ استطاعت مسلمانوں پرزندگی میں ایک بار فرض ہے۔حج پر مکہ مکرمہ میں عام طور پر دنیا کا سب سے بڑے مذہبی اجتماع منعقد ہوتا ہے 2019 میں پچیس لاکھ سے زیادہ افراد نے فریضۂ حج ادا کیا تھا۔

لیکن 2020 میں وبا کے آغاز کے بعد حکام نے اعلان کیا تھا کہ وہ صرف 1000 عازمین کو حج کی اجازت دیں گے۔اس سے اگلے سال انھوں نے قرعہ اندازی کے ذریعے منتخب ہونے والے عازمین حج کی تعداد 60 ہزار تک بڑھا دی تھی۔البتہ ان پر یہ شرط عایدکی گئی تھی کہ وہ سعودی عرب میں مقیم شہری اورتارک وطن ہوں اور انھوں نے کرونا وائرس کی کسی بھی ویکسین کے دونوں انجیکشن لگوا رکھے ہوں۔

اپریل میں سعودی حکومت نے اعلان کیا تھا کہ وہ اس سال جولائی میں ہونے والے حج میں ملک کے اندر اور باہر سے دس لاکھ مسلمانوں کو شرکت کی اجازت دے گی۔وزارت حج کے مطابق اس سال 65 سال سے کم عمر اور ویکسین لگوانے والے مسلمان ہی فریضۂ حج ادا کرسکتے ہیں۔

سعودی عرب سے باہر سے آنے والے حج ویزے کے درخواست گزاروں کو سفر کے 72 گھنٹے کے اندرکرائے گئے کووِڈ-19 پی سی آرٹیسٹ کا منفی نتیجہ بھی جمع کرانا ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں