ڈرون طیاروں کے حصار میں امریکی شہریوں کا سوڈان سے پہلا انخلاء

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈان میں دو ہفتوں سے جاری خونریز لڑائی سے فرار ہونے والے سیکڑوں امریکی ہفتے کے روز پورٹ سوڈان پہنچے۔ وہاں سے امریکا کے زیر انتظام ان کا پہلا انخلاء کیا گیا۔ امریکیوں کے سمندری سفر میں مسلح ڈرون طیاروں نے انہیں سکیورٹی فراہم کی۔

امریکی محکمہ خارجہ نے سوڈان کے جنگ زدہ علاقوں سے انخلاء کے ایک نئے قافلے کی سعودی عرب کے شہر جدہ جاتے ہوئے پورٹ سوڈان کے شہر پہنچنے کا اعلان کیا۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ "امریکی حکومت کے زیر اہتمام ایک قافلہ جس میں امریکی شہری، مقامی ملازمین، اور اتحادی اور شراکت دار ممالک کے شہری شامل ہیں پورٹ سوڈان پہنچ گیا ہے۔ ہم امریکی شہریوں اور دیگر افراد کی مدد کریں گے جو جدہ کا سفر کرنے کے اہل ہیں۔"

امریکی حکومت نے اس ہفتے فوجی مدد سے انخلاء کے ذریعے اپنے سفارت کاروں کو سوڈان سے نکالا تھا اس کےبعد سینکڑوں دوسرے امریکی شہریوں کو جنہیں زمینی قافلوں، پروازوں اور سمندروں کے ذریعے نکالا گیا ہے۔"

سینکڑوں امریکی شہری اور رہائشی امریکی حکومت کی طرف سے فراہم کردہ وسائل کے ذریعے سوڈان چھوڑ گئے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکا کی جانب سے علاقائی اور بین الاقوامی شراکت داروں کے تعاون سے کئے گئے گہرے مذاکرات "سکیورٹی حالات کو انخلاء کے قابل بنانے میں مددگار ثابت ہوئے جس کے بعد ہزاروں غیر ملکی اور امریکی شہریوں کی روانگی ممکن ہوئی"۔

امریکی محکمہ خارجہ نے اپنے شہریوں کو سوڈان کا سفر نہ کرنے کی وارننگ دہرائی۔

سوڈان میں اپریل کے وسط میں فوج کے کمانڈر عبدالفتاح البرہان اور ریپڈ سپورٹ فورسز کے کمانڈر محمد حمدان دقلو المعروف ‘حمیدتی‘ کے درمیان اقتدار کے لیے خونریز تصادم شروع ہونے کے بعد سے افراتفری کا شکار ہے۔ دو جرنیلوں کی باہمی رساکشی سے اب تک ساڑھے پانچ سو افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں