سرحدی جھڑپ کے بعد مصر اور اسرائیل کے وزرائے دفاع کے درمیان فون پر بات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصری وزیر دفاع محمد ذکی نے ہفتے کے روز اپنے اسرائیلی ہم منصب یوآو گیلنٹ کو فون کیا جس میں دونوں ملکوں کی سرحد پر پیش آنے والے حادثے کے حالات پر تبادلہ خیال کیا گیا، جس میں 3 اسرائیلی فوجیوں اور ایک مصری سکیورٹی کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے۔

مصری فوج کے ترجمان کے ایک بیان کے مطابق زکی نے دونوں طرف سے حادثے کے متاثرین سے تعزیت کی۔ دوسری طرف اسرائیلی وزیر دفاع نے کہا نہیں انہیں توقع ہے کہ مصر مستقبل میں ایسے واقعات کو دوبارہ ہونے سے روکے گا۔ انہوں نے عسکریت پسندی کے خلاف دونوں ملکوں کی افواج کو مل کر کام کرنے کی ضرورت پر زوردیا۔

مصر اور اسرائیل نے کہا ہے کہ ہفتے کے روز دونوں ممالک کی سرحد کے قریب 3 اسرائیلی فوجی اور ایک مصری سکیورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے تھے۔ اس غیرمعمولی واقعے کی دونوں ممالک کی طرف سے تحقیقات شروع کی گئی ہیں۔

اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ ایک مصری سکیورٹی اہلکار نے دو اسرائیلی فوجیوں کو اس وقت گولی مار کر ہلاک کر دیا جب وہ ہفتے کی صبح مصری سرحد پر ایک فوجی پوائنٹ کی حفاظت کر رہے تھے۔ قبل ازیں اسی علاقے سے اسرائیلی فوج نے جمعہ کی رات کو اسمگلنگ کی ایک بڑی کوشش کو ناکام بنائی تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ پہلے واقعے کے چند گھنٹے بعد اسرائیلی علاقے کے اندر ایک تصادم میں سکیورٹی اہلکار اور تیسرا اسرائیلی فوجی مارا گیا۔

اسرائیلی قابض فوج کی جنوبی کمان کے کمانڈر ایلیزر ٹولیڈانو نے کہا کہ فوج نے اس واقعے کو دہشت گردانہ حملہ قرار دیا۔

مصری فوج نے ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ فائرنگ کے تبادلے کے دوران 3 اسرائیلی سکیورٹی اہلکار اور ایک مصری سکیورٹی اہلکار مارے گئے، جب کہ مؤخر الذکر سرحد پار سے اسمگلروں کے ایک گروپ کا پیچھا کر رہا تھا۔

اسرائیلی فوج اور مصر کے دو سکیورٹی ذرائع نے بتایا کہ دونوں ممالک کے حکام مکمل تعاون کے ساتھ واقعے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں