الجزائر، گیانا، سیرا لیون، جنوبی کوریا، سلووینیا سلامتی کونسل کے غیر مستقل رکن منتخب

سلووینیا نے بیلاروس کے مقابلے بڑی فرق سے سیٹ جیت لی، باقی چار ملکوں کا بلامقابلہ انتخاب کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

الجزائر، گیانا، سیرا لیون، جنوبی کوریا اور سلووینیا نے سلامتی کونسل کی پانچ غیر مستقل سیٹوں کے لیے انتخاب جیت لیا۔ سلووینیا نے بیلا روس کے مقابلے میں بڑے فرق سے ووٹ حاصل کرکے مشرقی یورپ کے لیے سیٹ جیتی۔ باقی چار ملک بلا مقابلہ منتخب ہوگئے۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں 15 ملک شامل ہیں۔ جن میں ویٹو پاور کے حامل پانچ مستقل ارکان برطانیہ، فرانس، چین، روس اور امریکہ ہیں۔ 10 دیگر ملک دو سال کے لیے منتخب ہوتے ہیں۔ ہر سال پانچ ملکوں کے لیے الیکشن ہوتا ہے۔ 10 غیر مستقل نشستوں کے لیے مختص ملکوں کا انتخاب تمام خطوں کی یکساں نمائندگی کے تحت کیا جاتا ہے۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خفیہ رائے شماری میں سلووینیا نے مشرقی یورپ کے لیے مخصوص نشست کے لیے بیلاروس کے ساتھ مقابلہ کیا۔ سلووینیا نے 38 کے مقابلے میں 153 ووٹ حاصل کرکے یہ سیٹ جیت لی۔

الجزائر اور سیرالیون افریقہ کی نمائندگی کریں گے۔ جنوبی کوریا نے ایشیا اور بحرالکاہل کے علاقے کے لیے نشست حاصل کی۔ گیانا نے لاطینی امریکہ اور کیریبین کے لیے مخصوص نشست جیت لی۔

ہیومن رائٹس واچ میں اقوام متحدہ کے ڈویژن کے ڈائریکٹر لوئس چاربونیو نے کہا ہے کہ آج کی جنرل اسمبلی کے ووٹ سے پتہ چلتا ہے کہ اقوام متحدہ کے انتخابات میں مقابلہ کیوں ضروری ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ بلا شبہ اقوام متحدہ کے رکن ملکوں نے فیصلہ کیا ہے کہ بیلاروس کی طرف سے اندرون ملک انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں اور یوکرین میں کیے جانے والے روسی مظالم سے متعلق حقائق کو مٹا دینا اسے سلامتی کونسل میں نشست حاصل کرنے کا اہل نہیں بناتا۔ سلامتی کونسل انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے ایک ضروری ادارہ ہے۔

یہ پانچ ملک البانیہ، برازیل، گبون، گھانا اور متحدہ عرب امارات کی جگہ یکم جنوری 2024 سے شروع ہونے والی دو سالہ مدت کے لیے اپنی جگہ سنبھالیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں