دو ہفتوں کی بھوک ہڑتال، ھانیبال قذافی کی صحت خراب ہوگئی

ھانیبال نے بیروت میں بغیر مقدمہ اپنی حراست کے خلاف بھوک ہڑتال کا اعلان کیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان میں لیبیا کے مرحوم صدر کرنل معمر قذافی کے بیٹے ھانیبال قذافی کی صحت دو ہفتے بھوک ہڑتال کرنے کے نتیجے میں خراب ہوگئی ہے۔ وہ بیروت میں زیر حراست ہیں اور بغیر کسی مقدمہ کے اپنی گرفتاری کے خلاف انہوں نے دو ہفتے قبل بھوک ہڑتال شروع کردی تھی۔ ان کے وکیل نے بتایا کہ ان کی حالت بگڑ گئی ہے۔

چند روز قبل لیبیا کی صدارتی کونسل نے اس معاملہ کے حوالے سے وزیر انصاف حلیمہ البصیفی کی سربراہی میں ایک کمیٹی کے قیام کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے منصفانہ ٹرائل کو یقینی بنانے کے لیے تمام لبنانی حکام اور عدالتوں کے سامنے قانونی پیروی کرنے کے لیے ایک دفاعی کمیٹی کی تشکیل کا بھی حکم دیا ہے۔

صدارتی اقدام ھانیبال کی صحت کی خرابی کی خبروں کے بعد سامنے آیا ہے جس نے تقریباً دو ہفتے قبل بھوک ہڑتال کی تھی۔ ھانیبال کو 2008 میں شیعہ عالم موسی الصدر کے اغوا میں ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔ موسی الصدر کو طرابلس میں 1978 میں غائب کردیا گیا تھا۔

موسی الصدر کی گمشدگی کے معاملے میں قذافی کے بیٹے نے اپنی بے گناہی برقرار رکھی اور اس نے تحقیقات کے دوران بار بار کہا کہ اس کے پاس کوئی معلومات نہیں ہے کیونکہ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب وہ بچہ تھا اور اس کی گمشدگی کا علم صرف اس کے بڑے بھائی سیف الاسلام قذافی اور سابق وزیر اعظم عبد السلام کو ہو سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں