بحر اوقیانوس میں 38 سو میٹر گہرائی میں جانے والے مشہور ارب پتی سے رابطہ منقطع ہوگیا

چھوٹی آبدوز میں ہمیش بارڈنگ سمیت 4 افراد موجود، ٹائی ٹینک کا ملبہ دیکھنے گئے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ایک چھوٹی سی سیاحتی آبدوز سے اتوار سے کسی وجہ سے رابطہ منقطع ہو گیا۔ ان کے اندر موجود افراد بحر اوقیانوس میں ڈوبے ہوئے ٹائی ٹینک کے ملبے کی تلاش کے دورے پر تھے۔ آبدوز میں کپتان، ایک ارب پتی اور کئی سالوں سے برطانیہ میں مقیم ایک برطانوی سمیت 4 سیاح ہیں۔ یہ برطانوی 59 سالہ ہمیش ہارڈنگ ہیں۔ یہ بزنس جیٹ اور ہیلی کاپٹر کی فروخت کے لیے ایکشن ایوی ایشن کے چیئرمین ہیں۔برطانوی میڈیا کے مطابق آبدوز میں صرف 96 گھنٹے آکسیجن ہوتی ہے۔

کمپنی کے ترجمان کے مطابق OceanGate Expeditions جس نے اڑھائی لاکھ ڈالر میں اس سفر کا اہتمام کیا، نے فوری طور پر ایک ریسکیو ٹیم کو آبدوز کی تلاش کے لیے روانہ کردیا۔ کمپنی کے ترجمان کے مطابق ریسکیو ٹیم آبدوز کے سواروں کو محفوظ مقام پر واپس لائے گی۔ آبدوز میں موجود افراد کے کے اہل خانہ نے بتایا کہ کہ آبدوز کا بیس کے ساتھ آخری رابطہ اتوارکو جی ایم ٹی وقت کے مطابق سہ پہر 3 بجے ہوا تھا۔ ان کی آبدوز اس وقت ’’ٹائی ٹینک‘‘ کے ملبے کے عین اوپر تھی۔

’OceanGate Expeditions‘ کمپنی کے ترجمان کے مطابق کمپنی نے 250,000 ڈالر میں اس سفر کا اہتمام کیا تھا۔ سرچ مشن پر جانے والے افراد سے رابطہ منقطع ہونے کے بعد ریسکیو ٹیم کو آبدوز کو سمندر کے اس علاقے میں روانہ کیا گیا ہے۔

بدوز میں موجود اس کے تمام اراکین کے اہل خانہ کے مطابق آبدوز کا اڈے کے ساتھ آخری رابطہ پرسوں اتوار کی سہ پہر 3 بجے کے بعد سے معطل ہے۔ جب ان سے آخری بار رابطہ ہوا تو ٹیم اس وقت ملبے کے اوپر تھی۔

امریکی شہر بوسٹن میں کوسٹ گارڈ کے ترجمان نے ایک میڈیا بیان میں کہا کہ "ٹائی ٹینک کے ملبے کے قریب ایک چھوٹی آبدوز کے 5 افراد کے ساتھ لاپتہ ہونے کی اطلاعات ہیں،کسی نے بھی اس کی تاریخ کا ذکر نہیں کیا۔ کوسٹ گارڈ کے مطابق ٹائی ٹینک کے ملبے کی تلاش میں جانے والے افراد کے پاس جمعرات تک کے لیے آکسیجن تھی۔

اس کے بعد امریکی شہر بوسٹن میں کوسٹ گارڈ کے ترجمان نے بتایا کہ ٹائی ٹینک کے ملبے کے قریب ایک چھوٹی آبدوز کے 5 افراد کے ساتھ لاپتہ ہوگئی ہے۔ لیکن مقررین میں سے کسی نے بھی اس کی تاریخ کا ذکر نہیں کیا۔ آکسیجن کی کمی جو ممکنہ طور پر اگلے جمعرات کو بہت زیادہ ہوسکتی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے ٹائٹینک کے قریب پھنس جانے والی اس آبدوز کے حوالے سے روپوٹوں کا جائزہ لیا ہے۔ یہ آبدوز سطح سمندر سے 38 سو میٹر گہرائی میں جا کر ڈوب گئی یا پھنس گئی ہے۔

جہاں تک ارب پتی "ہارڈنگ" کا تعلق ہے تو وہ ایک تجربہ کار ایکسپلورر ہے۔ ان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ بلیو اوریجن کے ’’ این ایس 21 ‘‘ مشن کے ایک حصے کے طور پر دنیا کے نیچے تک غوطہ لگانے اور خلا میں اڑان بھرنے والے پہلے عملے میں شامل ہو کر ایک ریکارڈ قائم کر چکے ہیں۔ وہ ان دو افراد میں سے ایک تھے جنہوں نے دو سال قبل چیلنجر ڈیپ می 12 گھنٹے کا غوطہ لگایا تھا۔ یہ دونوں 36 ہزار فٹ سے زیادہ گہرائی میں گئے تھے۔

ارب پتی ہارڈنگ نے گزشتہ ہفتے سوشل میڈیا پر لکھا تھا کہ وہ ایک "مشن اسپیشلسٹ کے طور پر سفر میں شامل ہو رہے ہیں اور 40 سالوں میں نیو فاؤنڈ لینڈ میں بدترین موسم سرما کو دیکھتے ہوئے، یہ مشن 2023 میں پہلا اور ٹائٹینک تک جانے والا انسانوں کا واحد مشن ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں