یوکرین مذاکرات نے امن کی مشترکہ بنیاد فراہم کردی: جدہ مذاکرات کا اعلامیہ

بحران پر مشاورت جاری رکھنے اور مجوزہ آراء سے فائدہ اٹھانے پر اتفاق کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یوکرین کے بارے میں جدہ مذاکرات کے حتمی بیان نے اس بات کی تصدیق کی کہ مذاکرات نے امن کے لیے مشترکہ بنیاد بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ بحران پر مشاورت جاری رکھنے اور مجوزہ آرا سے فائدہ اٹھانے کی ضرورت پر زور دینے پر اتفاق کیا گیا ہے۔ اتوار کو جاری حتمی بیان میں کہا گیا کہ ملاقات میں مثبت تجاویز اور آراء پر بھی غور کیا گیا۔

جدہ میں قومی سلامتی کے مشیروں اور اقوام متحدہ سمیت 40 سے زیادہ ملکوں اور بین الاقوامی اداروں کے نمائندوں کا اجلاس ہوا۔ اجلاس کی صدارت سعودی وزیر مملکت، وزراء کونسل کے رکن اور قومی سلامتی کے مشیر مساعد بن محمد العيبان نے کی۔ شرکا نے اجلاس بلانے اور اس کی میزبانی کرنے پر سعودی عرب کی قیادت کا شکریہ ادا کیا۔

یہ مذاکرات سعودی ولی عہد اور وزیر اعظم شہزادہ محمد بن سلمان کی کوششوں کے تسلسل کے نتیجے میں ممکن ہوئے۔ سعودی ولی عہد مارچ 2022 سے اس حوالے سے کوشش جاری رکھے ہوئے تھے۔

سعودی عرب میں ہونے والے مذاکرات میں جن ملکوں اور تنظیموں نے شرکت کی ان میں ارجنٹائن، آسٹریلیا، بحرین، برازیل، بلغاریہ، کینیڈا، چلی، چین، متحدہ کوموروس، چیک، ڈنمارک، مصر، ایسٹونیا، یورپی کمیشن، کونسل آف یورپ، فن لینڈ، فرانس، جرمنی، بھارت ، انڈونیشیا، اٹلی، جاپان، اردن، کویت، لٹویا، لتھوانیا، نیدرلینڈز، ناروے، پولینڈ، قطر، کوریا، رومانیہ، سلوواکیہ، جنوبی افریقہ، سپین، سویڈن، ترکیہ، یوکرین، متحدہ عرب امارات، برطانیہ، اقوام متحدہ اور امریکہ شامل تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں