بوسہ کے بعد مجوزہ معذرت نامہ روبیلز نے پڑھنے سے انکار کردیا تھا: رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سپین میں ایک اخبار نے ایک معذرت پر مبنی ایک لیٹر کا انکشاف کیا ہے جسے ہسپانوی فٹ بال فیڈریشن کے سابق صدر روبیلز نے مشہور اور متنازع بوسہ سکینڈل کے بعد جنرل اسمبلی کے دوران پڑھنے سے انکار کر دیا۔

اتوار کو ایل منڈو اخبار نے بتایا کہ تقریباً فٹ بال ایسوسی ایشن کی جانب سے مقرر کیے گئے ایک بیرونی مشیر لوئس ارویو کے لکھے گئے لیٹر میں روبیلز کے استعفیٰ کے امکان سمیت حساس موضوعات پر بات کی گئی تھی۔

روبیلز نے حالیہ دنوں میں خواتین کا ورلڈ کپ جیتنے کے بعد تقریب میں سپین کی قومی کھلاڑی کو بوسہ دیا اور احتجاج اور تنقید کے بعد استعفیٰ دینے پر مجبور ہوگئے تھے۔ یہ لیٹر جس کا انکشاف ہوا ہے روبیلز کو درپیش مخمصوں پر روشنی ڈالتا ہے۔

اخبار کی طرف سے شائع لیٹر کے کا متن میں درج ہے ’’میں دل کی گہرائیوں سے بہت معذرت خواہ ہوں کیونکہ میں نے اپنی خواتین ٹیم کی اس عظیم فتح کو توڑ مروڑ کر پیش کیا۔ پہلی غلطی کھلاڑی جینی ہرموسو کے ساتھ اعتماد کی حدوں سے تجاوز کرنا تھی۔ وہ جانتی ہیں کہ میرا کوئی برا ارادہ نہیں تھا لیکن یہ واضح ہے کہ وہ خوشی کی نشانی تھی۔

میں بے شک نامکمل ہوں لیکن میں خود کو ایک باعزت شہری سمجھتا ہوں اور میں نے کبھی بھی خواتین پر تشدد کو قبول نہیں کیا۔ دوسری غلطی یہ تھی کہ خاص طور پر کھلاڑیوں اور کوچز کے ساتھ کئی گھنٹوں کے سفر کے بعد میں اس وقت سماجی حساسیت کو سراہنے کے قابل نہیں تھا۔ تیسری غلطی میں نے یہ کی کہ اپنے رویے کی مذمت نہیں کی۔

مجھے اس وقت کہنا چاہیے تھا جو میں اب کہتا ہوں مجھے افسوس ہے۔ مجھے پورا یقین ہے کہ میرے اس رویے میں کوئی قابل سزا فعل نہیں ہے اور اگر ضروری ہوا تو میں اس کی تصدیق کروں گا لیکن یہ واضح ہے کہ میرا رویہ مناسب نہیں تھا اور میں اپنی معذرت دہراتا ہوں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں