کشمیر کا مسئلہ خطے کے امن کو درپیش اہم چیلنجز میں سے ہے: سعودی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے تحت جموں و کشمیر رابطہ گروپ کا بدھ کو نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 78 ویں سیشن کے موقع پر خصوصی اجلاس ہوا۔

خبر رساں ادارے ایس پی اے کے مطابق رابطہ گروپ کے اجلاس میں سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے بھی شرکت کی۔

شہزادہ فیصل بن فرحان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’سعودی عرب اسلامی تشخص اور اپنے وقار کے تحفظ کے لیے کوشاں مسلم اقوام کے ساتھ کھڑا ہے۔‘

’سعودی عرب شورش زدہ علاقوں میں متاثرہ اقوام کی مدد پر کمر بستہ ہے۔ متاثرہ اقوام میں جموں و کشمیر کے باشندے شامل ہیں۔‘

سعودی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ’جموں و کشمیر کا مسئلہ خطے کے امن و استحکام کو درپیش اہم ترین چیلنجوں میں سے ایک ہے۔ اگر کشمیر کا مسئلہ حل نہ ہوا تو اس کا اثر خطے میں عدم استحکام میں اضافے کا باعث بنے گا۔‘

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب اقوام متحدہ کی متعلقہ قراردادوں کے مطابق پرامن تصفیے اور حالات کو پرسکون بنانے نیز کشیدی کم کرنے کے لیے متحارب فریقوں کے درمین ثالثی کی بھرپور کوششیں کر رہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا ’سعودی عرب یہ کام مسلم اقوام کی حمایت سے متعلق اپنے غیر متزلزل موقف کی بنیاد پر کر رہا ہے۔‘

اجلاس میں سیکریٹری کثیر فریقی بین الاقوامی امور ڈاکٹر عبدالرحمن الرسی اور وزیر خارجہ کے دفتر کے ڈائریکٹر جنرل عبدالرحمن الداود بھی شریک تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں