کورین کمپنی سعودی عرب میں پہلا بڑا کار پلانٹ لگائے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

جنوبی کوریا کے صدر یون سک یول نے کہا ہے کہ ہاینڈائی موٹر گروپ سعودی عرب میں پبلک انویسٹمنٹ فنڈ(پی آئی
ایف) کے ساتھ مشترکہ طور پر کار پلانٹ تعمیر کرے گی۔

ریاض کے دورے کے دوران ایک اعلیٰ سطحی وفد کے ہمراہ جنوبی کوریا کے صدر نے ایک تقریب میں شرکت کی جہاں سعودی سرمایہ کاری فنڈ، پی آئی ایف اور ہاینڈائی، کوریا کی سب سے بڑی کار ساز کمپنی نے پلانٹ لگانے کے حوالے سے معاہدے پر دستخط کیے۔ ملک کے اس پہلے بڑے پلانٹ کی سالانہ پیداواری صلاحیت 50,000 الیکٹرک اور گیس سے چلنے والی کاریں ہوں گی اور یہ مشرق وسطیٰ میں جنوبی کوریا کی پہلی آٹوموبائل فیکٹری ہو گی۔ جنوبی کوریائی صدر نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس پلانٹ سے 2026 میں پیداوار شروع ہو جائے گی۔

اتوار کو ہونے والے معاہدے کے تحت، ہاینڈائی جو کہ دنیا کی بڑی آٹو موبائل تیار کنددہ میں شامل ہے اپنے مقامی شراکت دار سے مل کر سعودی عرب کے مغربی علاقے میں قائم کنگ عبداللہ اکنامک سٹی میں کار پلانٹ کے قیام کے لیے مشترکہ طور پر 500 ملین امریکی ڈالر سے زیادہ کی سرمایہ کاری کرے گی۔ اسے سعودی آٹو موبائل مارکیٹ میں پہلی بڑی سرمایہ کاری قرار دیا جا رہا ہے۔

سعودی آٹو موبائل مارکیٹ مشرق وسطیٰ میں سب سے بڑی مارکیٹ میں سے ایک ہے۔ سعودی عرب میں کاروں کی فروخت میں 2025 تک 24 فیصد کی سالانہ شرح سے اضافہ متوقع ہے۔

ہاینڈائی موٹر گروپ، فروخت کے لحاظ سے دنیا میں تیسرے نمبر پر ہے اور خلیجی ریاست میں یہ برقی توانائی سے چلنے والی کاروں کی مینوفیکچرنگ بھی شروع کر رہا ہے۔ یہ سعودی عرب کی ان کوششوں میں معاون ثابت ہو گا جس سے معیشت کا تیل کے شعبے پر انحصار کم ہو گا۔

اپنے سعودی عرب کے دورے کے دوران جنوبی کوریائی صدر نے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے ملاقات کی جو کہ سعودی عرب کو مستقبل کے بدلتے معاشی منظر نامے سے ہم آہنگ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ جس کے تحت ترقی کی از سر نو سمت کا تعین کر کے تیل کی صنعت کے علاوہ دوسرے ابھرتے ہوئے شعبوں میں سرمایہ کاری شامل ہے۔

کوریا کے وفد نے دورہ کے دوران متعدد معاہدوں پر دستخط کیے جن میں سٹریٹجک شراکت داری کے تحت مختلف منصوبوں پر کام کرنا ہے۔ ان میں سے ایک اہم منصوبہ گرین ہائیڈروجن تیار کرنا بھی ہے۔

کوریا کی کمپنی سے آٹوموبیل کی تیاری کے معاہدے کا مقصد 2030 تک کاروں کی تیاری کو بڑھا کر 300,000 تک لے جانا ہے۔ یہ قدم سعودی عرب کی ان کوششوں میں مددگار ثابت ہو گا جس سے خلیج تعاون کونسل کے ممالک میں 2025 تک تقریباً 1.15 ملین کاروں میں سے 50 فیصد کاروں کی فروخت میں حصہ ڈالنا شامل ہے۔ ان گاڑیوں میں 62،000 الیکٹرک کاریں تیار کرنے کا ہدف ہے۔

سعودی عرب نے 2030 تک 45 فیصد ماحول دوست نقل و حرکت کے ذرائع پیدا کرنا اور مصنوعی ذہانت پر مشتمل 25 فیصد خود مختار نقل و حرکت کے حصول کے اہداف مقرر کئے ہیں۔ ان بلند اہداف کے حصول کے لیے آٹو موبائل کے شعبے میں پیشرفت امید افزا مستقبل کی طرف اشارہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں